ہندوستان دہشت گردی کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی اپناتا ہے:وزیر داخلہ امیت شاہ

حیدرآباد//مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے جمعہ کو کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ہندوستان نے دہشت گردی کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی اپنائی ہے۔مسٹر شاہ نے یہاں سردار ولبھ بھائی پٹیل نیشنل پولیس اکیڈمی (ایس وی پی این پی اے) میں انڈین پولیس سروس (آئی پی ایس) کے 75 آر آر بیچ کے پروبیشن افسران کی پاسنگ آؤٹ پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ انہوں نے دہشت گردی کے خلاف زیرو ٹالرنس پالیسی سے زیرو ٹالرنس حکمت عملی اور زیرو ٹالرنس کارروائی کی طرف جانے کی ضرورت پر زور دیا۔انہوں نے کریمنل پروسیجر کوڈ (سی آر پی سی)، تعزیرات ہند (آئی پی سی) اور ایویڈینس ایکٹ سمیت پرانے برطانوی دور کے قوانین میں اصلاحات کے لیے حکومت کی کوششوں کا بھی ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ ان تبدیلیوں کا مقصد لوگوں اور اہلکاروں کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے۔ شہریوں کو مناسب تحفظ فراہم کرنے کے لیے ان قوانین پر عمل درآمد کو یقینی بنانا چاہیے۔مسٹرشاہ نے کہا کہ مرکز نے ان تینوں بلوں کو پارلیمنٹ میں پیش کیا ہے اور وزارت داخلہ کی پارلیمانی کمیٹی ان کا مطالعہ کر رہی ہے اور بہت جلد یہ قوانین پاس ہو جائیں گے۔انہوں نے کہا، ’’ان قوانین کی بنیاد پر ایک نیا فوجداری انصاف کا نظام شروع ہو گا۔اس کے علاوہ مرکزی وزیر نے آئی پی ایس افسران پر زور دیا ہے کہ وہ پسماندہ افراد کی فلاح و بہبود اور حفاظت کے لیے تندہی سے کام کریں۔ انہوں نے منظم جرائم کی مختلف شکلوں سے درپیش چیلنجز پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے سائبر کرائمز کو کنٹرول کرنے اور مجرمانہ سرگرمیوں، خاص طور پر حوالہ اور جعل سازی سے متعلق سرگرمیوں سے نمٹنے میں ٹیکنالوجی کے کردار پر بھی زور دیا۔مسٹر شاہ نے تسلیم کیا کہ آئی پی ایس افسران کو مستقبل میں کئی چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے انہیں سائبر کرائم، کرپٹو کرنسی، حوالہ لین دین، جعلی کرنسی، منشیات، بین ریاستی مجرمانہ نیٹ ورکس، چارج شیٹ فائلنگ اور فرانزک سائنس جیسے مختلف پہلوؤں میں مہارت حاصل کرنے کی بھی حوصلہ افزائی کی۔انہوں نے فوجداری انصاف کے طریقوں کو ترقی یافتہ قانونی نظاموں سے جوڑنے اور تحفظ فراہم کرنے میں عوام کا اعتماد حاصل کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیا۔پروگرام کے دوران مسٹر شاہ نے بہترین ٹرینی افسران کو ٹرافیاں پیش کیں۔