جی ٹونٹی اجلاس: سرینگرمیں این ایس جی کمانڈوز کی تعیناتی فضائی نگرانی کے لئے ڈرونز کا استعمال

SRINAGAR, MAY 18 (UNI) NSG commandos conduct searches at business hub Lal chowk ahead of G20 meeting, in Srinagar on Thursday.UNI PHOTO-97U

یو این آئی
سرینگر//جی ٹونٹی سربراہی اجلاس سے قبل ہی نیشنل سیکورٹی گارڈ (این ایس جی) کمانڈوز نے لالچوک اور اس کے گرد نواح علاقوں میں ہوٹلوں اور خالی پڑی عمارتوں کی تلاشی لی۔معلوم ہوا ہے کہ سری نگر میں این ایس جی کمانڈوز کو جگہ جگہ پر تعینات کیا گیا ہے۔اطلاعات کے مطابق جمعرات کے روز نیشنل سیکورٹی گارڈ(این ایس جی ) کمانڈوز نے پولیس اور سی آ پی ایف کے ہمراہ لالچوک اور اس کے گرد نواح علاقوں میں ہوٹلوں کی تلاشی لی۔ذرائع نے بتایا کہ سری نگر میں کسی بھی ناخوشگوارواقعے کو ٹالنے کی خاطر جگہ جگہ سیکورٹی فورسز کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے۔
یو این آ ئی کے ایک نامہ نگار نے شہر کے مختلف علاقوں کا دورہ کرنے کے بعد بتایاکہ سری نگر میں اکثر مقامات بشمول تجارتی مراکز لالچوک، جہانگیر چوک، بتہ مالو، ڈلگیٹ وغیرہ میں سیکورٹی فورسز نے ناکے لگائے ہیں جہاں لوگوں کی جامہ تلاشی لی جارہی ہیں اور ان کے شناخت کارڈ باریک بینی سے چیک کئے جارہے تھے۔نامہ نگار نے کہاکہ پیدل سفر کرنے والوں کو بھی ان ناکہ چیک پوائنٹس پر روکا جاتا ہے اوران کی جامہ تلاشی لی جاتی ہے اور گاڑیوں خاص کر موٹر سائیکل سواروں کو بھی روکا جاتا ہے اور ان کی تلاشی اور پوچھ تاچھ کی جاتی ہے۔
دریں اثنا پولیس نے سری نگر اور گرد نواح علاقوں کی فضائی نگرانی کے لئے ڈرونز کا استعمال کیا۔حکام نے بتایاکہ جی ٹونٹی اجلاس کے پیش نظر سیول لائنز علاقوں کی ڈرونز کے ذریعے نگرانی کی جارہی ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ فضائی نگرانی کا یہ سلسلہ چوبیس مئی تک جاری رہے گا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ان ڈرونز کی مدد سے ہم کسی بھی تخریبی منصوبے کو ٹال سکتے ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ شہر سری نگر میں سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے لوگوں پر نظر رکھی جارہی ہیں۔
معلوم ہوا ہے کہ شہر کے داخلی اور خارجی راستوں پر سیکورٹی فورسز کی تعیناتی عمل میں لا کر راہگیروں اور گاڑیوں کی باریک بینی سے تلاشی لی جارہی ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ پوری وادی میں سیکورٹی فورسز کو چوکس رہنے کے احکامات صادر کئے گئے ہیں تاکہ جنگجووں کے منصوبوں کو ناکام بنایا جا سکے۔علاوہ ازیں سی آر پی ایف چیف نے جمعرات کی سہ پہر کو لالچوک اور اس کے گرد نواح کے علاقوں کا دورہ کیا اور وہاں پر سی آ ر پی ایف کی جانب سے کئے جا رہے انتظامات کا جائزہ لیا۔ نامہ نگار نے بتایا کہ لالچوک سے لے کر ایم اے روڈ تک ڈائریکٹر جنرل آ ف سی آ ر پی ایف نے پیدل سفر کیا اور اس دوران ان کے ہمراہ فوج کے بھی آفیسران تھے۔