خطہ پیر پنچال میں 2سڑک حادثات، 4جاں بحق 23زخمیوں میں سے 5 میڈیکل کالج جموں منتقل

پریم سنگھ +قمر عباس کیانی بدھل +مینڈھر // پیر پنچال خطہ میں جمعہ کے روز پیش آئے دو الگ الگ سڑک حادثات میں4افراد جاں بحق جبکہ کم از کم 23زخمی ہو گئے ۔ کئی شدید زخمیوں کو تشویشناک حالت میں گورنمنٹ میڈیکل کالج ہسپتال جموں پہنچایا گیا ہے ۔ بدھل میں سہ پہر 3بجے کے قریب مسافروں سے کھچا کھچ بھری ہوئی تیز رفتار میٹا ڈور سڑک پر الٹ جانے سے 3افراد موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے جبکہ 15دیگر زخمی ہو گئے ۔ گاڑی بدھل سے کوٹرنکہ کی طرف جا رہی تھی ۔ عینی شاہدین کے مطابق میٹا ڈور میں زیادہ تر افراد نماز جمعہ ختم ہو نے کے بعد سوار ہوئے تھے ۔ سہ پہر 3بجے کے قریب میٹا ڈور زیر نمبر6229/JK11 ابھی بمشکل 100میٹر چلی تھی کہ تیز رفتاری کے باعث ڈرائیور کے قابو سے باہر ہو کر سڑک پر الٹ گئی ۔ موقع پر جاں بحق ہونے والوں کی شناخت محمد اشرف ولد مکھنہ ساکنہ بیلا خواس ، ذوالکفیل ولد عبد الشکور ساکنہ دراج اور طارق اقبال ولد عبدالرشید سکنکہ پھلنی کے طور پر ہوئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق دو افراد موقع پر ہی دم توڑ گئے تھے جب کہ طارق اقبال نے ہسپتال میں دم توڑا ۔حادثہ کے بعد پورے بدھل قصبہ میں افراتفری پھیل گئی اور لوگوں کی ایک بڑی تعداد جائے وقوعہ پر پہنچ گئی ۔ شدید زخمیوں کو فوری طور پر ضلع ہسپتال راجوری پہنچایا گیا جہاں سے 3کو بذریعہ ہیلی کاپٹر گورنمنٹ میڈیکل کالج ہسپتال جموں منتقل کیا گیا ۔ زخمیوں میں انتخاب احمد ولد جمشید حسین سکنہ سوکر درہال ، رضیہ بیگم زوجہ مشری سکنہ درمن ، سارو بیگم زوجہ محمد بشیر سکنہ جگلانوں ، عبدالشکور ولد عبدالمجید سکنہ سموٹ ، محمد بشیر ولد عباللہ سکنہ ڈنڈوت ، انور بیگمزوجہ محمد اشرف سکنہ پھگولی ، جمیلہ بیگم زوجہ عبدالرشید سکنی سیاری ، شاہین اختر دختر محمد یعقوب سکنہ سیاری ، محمد رشید ولد علی محمد سکنہ کنڈرا ترگائیں ، عبدالغنی ولد محمد رشید سکنہ ہبی ، محمد شفیق ولد غلام محمد سکنہ ڈناڈوت ، محمد شریف ولد ولی محمد سکنہ دراج ، محمد شبیر ولد محمد شریف سکنہ بھیانبل ، ساد ھو رام ولد تیج رام سکنہ بدھل ، ثریا کوثر زوجہ عرفان ندیم سکنہ سموٹ ، سندراں بیگم زجہ محمد رفیق سکنہ بدھل ، امتیاز احمد ولد نثار احمد سکنہ کیول اور محمد اشفاق ولد محمد اقبال سکنہ درمن شامل ہیں ۔ اس دوران ذرائع نے بتایا کہ طارق اقبال نامی شدید زخمی شخص ، جس کی بعد میں بدھل ہسپتال میں موت واقع ہو گئی ، کو راجوری کی طرف ایمبولینس پر پہنچایا جا رہا تھا ۔ ذرائع کے مطابق ایمبولینس بدھل سے 10کلو میٹر دور گئی تھی کہ ڈرائیور کو فون آیا کہ وہ زخمی کو واپس لے آئے کیونکہ اسے بذریعہ ہیلی کاپٹر منتقل کیا جائے گا ۔ تاہم جب اسے واپس بدھل پہنچایا گیا تو کافی دیر تک کوئی ہیلی کاپٹر نہ پہنچا اور تب تک وہ زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ گیا ۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ جس جگہ حادثہ پیش آیا ، وہاں محض چند میٹر کی دوری پر پولیس سٹیشن بھی ہے لیکن اس کے باوجود ڈرائیور کی تیز رفتاری پر کسی نے اسے نہیں روکا ۔ اس دوران ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری ڈاکٹر شاہد اقبال چوہدری نے ہلاک شدگان کے ورثا کو ایک ، ایک لاکھ روپے ، شدید زخمیوں کو 20-20ہزار روپے اور معمولی زخمیوں کو 10-10ہزار روپے کی عبوری امداد کا اعلان کیا ۔ ڈپٹی کمشنر نے ایس ایس پی یوگل منہا س ، چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر سریش گپتا ، اے سی آر عبدالقیوم میر اور دوسرے آفیسران کے ساتھ بچاﺅ و راحت کارروائیوں کی نگرانی کی ۔ائر فورس کا ایک ایم آئی 17ہیلی کاپٹر راجوری منگوایا گیا جس کے ذریعہ 3زخمیوں کو جموں بھیجا گیا ۔ ڈپٹی کمشنر راجوری کے دفتر سے جاری ایک بیان کے مطابق چونکہ ہیلی کاپٹر بدھل ہیلی پیڈ پر اتر نہ سکا اس لئے اسے راجوری کی طرف موڑ لیا گیا ۔ اس سے قبل جمعہ کی صبح مینڈھر کے سلوا علاقہ میں ایک ٹا ٹا سومو کے حادثہ کا شکار ہو جانے سے ایک 3سالہ بچہ جاں بحق ہو گیا جب کہ 5خواتین سمیت 8افراد زخمی ہو گئے ۔ ذرائع کے مطابق حادثہ جمعہ کی صبح ساڑھے 8بجے اس وقت پیش آیا جب ایک ٹا ٹا سومو زیر نمبر JK02AL-2148سڑک سے لڑھک کر نیچے کھیتوں میں جا گری ۔ 3سالہ محمد سجاد ولد محمد نثا ر سکنہ سلوا موقع پر ہی دم توڑ گیا جبکہ نظام ولد نذیر حسین عمر 52سکنہ سلوا ، صدیقہ بی زوجہ غلام عباس عمر 30سال سکنہ سلواہ ، کفیل احمد ولد نظام دین عمر20 سال سکنہ سلوا، آفتاب احمد ولد محمد شریف عمر18 سال سکنہ سلوا، متین بی زوجہ محمد شریف عمر 48 سال سکنہ سلوا، فدا حسین ولد نثار احمد عمر 6سال سکنہ سلوا، غلام عباس ولد محمد شفیق عمر 30سال سکنہ سلوا اور زرون بی زوجہ محمد نثار عمر 32سال سکنہ سلوا زخمی ہو گئی ۔ بی ایم او مینڈھر ڈاکٹر پرویز خان نے بتایا کہ حادثہ کی اطلاع ملتے ہی ایمبولینس موقع پر بھیج دی گئی اور تمام زخمیوں کو سب ضلع ہسپتال پہنچایا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہدو شدید زخمیوں نظام الدین ولدِ نذیر حسین اور کفیل احمد ولد نظام الدین کو ان کی تشویشناک حالت دیکھتے ہوئے گورنمنٹ میڈیکل کالج ہسپتال جموں منتقل کر دیا گیا جبکہ باقی 6زخمیوں کی حالت خطرے سے باہر ہے اور ان کا علاج چل رہا ہے ۔