پشاور زرعی ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ کے ہاسٹل پر دہشت گردانہ حملہ ، 9 افراد ہلاک، 37 زخمی

یو این آئی
پشاور//پاکستان میں پشاور کے زرعی ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ کے ہاسٹل پر ا?ج صبح برقع پوش مسلح دہشت گردوں کے حملے میں کم از کم نو افراد ہلاک ہو گئے اور 37 افراد زخمی ہو گئے۔ حملے کے فوری بعد فوج، فرنٹیئر کورپس (ایف سی) اور پولس اہلکاروں نے علاقے کا محاصرہ کرتے ہوئے دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کا آغاز کیا۔مقامی اخبار ‘ایکسپریس ٹربیون’ نے بتایا کہ برقع میں تین حملہ آور رکشے سے زراعت انسٹی ٹیوٹ کے اندر آئے تھے۔ انہوں نے انسٹی ٹیوٹ کے احاطے میں گھس کر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی جس سے آٹھ طلبہ اور ایک ملازم کی موت ہو گئی۔ زخمیوں میں ایک پولس سب انسپکٹر اور ایک کانسٹیبل بھی شامل ہے۔اس حملے میں ہلاک شدگان کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے کیوونکہ سلامتی دستہ کی کارروائی ابھی جاری ہے اور متعدد زخمیوں کی حالت نازک ہے۔ پولس ذرائع کے مطابق حملہ آوروں نے پشاور کی زرعی یونیورسٹی کے سامنے ڈائریکٹوریٹ جنرل ایگریکلچرل ریسرچ سینٹر کی عمارت پر حملہ کیا تھا جس کے بعد پولیس کی بھاری نفری فوری طور پر جائے وقوع پر پہنچی۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق حملے میں ملوث تینوں دہشت گردوں کو ہلاک کردیا گیا ہے جبکہ ڈائریکٹریٹ میں کلیئرنس آپریشن بھی مکمل کرلیا گیا ہے۔آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ ا?ٓپریشن کے دوران دو فوجی جوان زخمی بھی ہوئے ہیں جنہیں سی ایم ایچ اسپتال پشاور منتقل کردیا گیا۔ڈان نیوز کی رپورٹ کے مطابق دہشت گردوں نے برقع پہن رکھا تھا اور وہ زرعی ڈائریکٹریٹ میں داخل ہوئے جبکہ پولیس کا کہنا تھا کہ برآمد ہونے والے ہتھیاروں سے معلوم ہوتا ہے کہ حملہ آور پوری تیاری کے ساتھ آئے تھے۔ پولس حکام کے مطابق خیبر ٹیچنگ اسپتال میں 16 زخمیوں کو لایا گیا ہےجن میں سے 3 زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئے۔