ریاست کی خصوصی پوزیشن بحال کر کے ہی چین لیں گے : ڈاکٹر فاروق

اڑان نیوز
سرینگر// آئین ہند کے تحت جموں وکشمیر کو حاصل خصوصی اختیارات کی بحالی کیلئے جدوجہد جاری رکھنے کا اعلان کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا ہے کہ نیشنل کانفرنس اُس وقت تک چین سے نہیں بیٹھے گی جب تک نہ ریاست کی خصوصی پوزیشن (اٹانومی) بحال نہیں کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ریاست اس وقت انتہائی نازک دور سے گزر رہی ہے اور ایسے میں نیشنل کانفرنس پر جموں و کشمیر کو بحران سے باہر نکالنے کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔ پارٹی کی مجلس عاملہ میٹنگ ، جو ان کی صدارت میں پارٹی ہیڈکوارٹر نوائے صبح کمپلیکس میں منعقد ہوئی ، سے خطاب کرتے ہوئے صدرِ نیشنل کانفرنس ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ نیشنل کانفرنس ریاست جموں وکشمیر کے مفادات اور آئین ہند کے تحت حاصل خصوصی اختیارات کی بحالی کیلئے اپنی جدوجہد جاری و ساری رکھے گی۔انہوں نے کہا ” ہماری جماعت اُس وقت تک چین سے نہیں بیٹھے گی جب تک نہ ریاست جموں وکشمیر کی خصوصی پوزیشن (اٹانومی) بحال نہیں کی جائے گی“۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس کو یہ طرہ امتیاز حاصل رہا ہے کہ یہ جماعت ریاست کے تینوں خطوں کے لوگوں کی اپنی جماعت رہی ہے اور ہم پر یہ فرض عائد ہوتا ہے کہ ہم جموں وکشمیر کی ہم آہنگی، انفرادیت، اجتماعیت اور کشمیریت کو برقرار رکھنے میں اپنا رول بخوبی نبھائیں۔ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ ریاست اس وقت انتہائی نازک دور سے گزر رہی ہے اور ایسے میں نیشنل کانفرنس پر جموں و کشمیر کو بحران سے باہر نکالنے کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔ اجلاس میں پارٹی کے کارگذار صدر عمر عبداللہ، جنرل سکریٹری علی محمد ساگر، معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفےٰ کمال ، صوبائی صدور دیوندر سنگھ رانا اور ناصر اسلم وانی کے علاوہ ریاست کے تینوں خطوںکے ممبرانِ مجلس عاملہ نے شرکت کی۔ اجلاس میں ریاست کی موجودہ سیاسی اور انتظامی صورتحال، لوگوں کو درپیش مسائل ومشکلات اور پارٹی سرگرمیوں اور تنظیمی امورات پر تبادلہ خیالات کے علاوہ کل منعقد ہونے والے پارٹی کے ڈیلی گیٹ سیشن کی تیاریوں کی بھی سام لی گئی۔ اجلاس میں ڈیلی گیٹ سیشن میں پیش کی جانے والی قردادوں کو مجلس عاملہ نے منظوری دی۔ دریں اثناءصدرِ نیشنل کانفرنس ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور کارگذار صدر عمر عبداللہ نے پارٹی کے بزرگ لیڈر اور ریاستی اسمبلی کے سابق ڈپٹی سپیکر مولوی عبدالرشید آف بانہال کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے۔ دونوں لیڈران نے اس سانحہ ارتحال پر مرحوم کے جملہ سوگوران کے ساتھ دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے اُن کی جنت نشینی کیلئے دعا کی۔ یا درہے کہ مرحوم مولوی عبدالرشید شیر کشمیر شیخ محمد عبداللہ کے ساتھیوں میں شمار ہوتے تھے اور تحریک حریت کشمیر خصوصی تحریک محاذ رائے شماری میں مرحوم نے بے شمار قید و بند کے مصائب اور مشکلات جھیلے اور آخری دم تک پارٹی اور قیادت کیساتھ وفا کی۔ پارٹی کے جنر ل سکریٹری علی محمد ساگر، معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفےٰ کمال، صدرِ صوبہ جموں دیوندر سنگھ رانا، سینئر لیڈران سجاد احمد کچلو، خالد نجیب سہروردی، ڈاکٹر بشیر احمد ویری ، شیخ بشیر احمد اور سجاد شاہین نے بھی اس سانحہ ارتحال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے ۔ ادھر شیر کشمیر بھون جموں اور نوائے صبح کمپلیکس سرینگر میں تعزیتی اجلاسوں میں مرحوم کو زبردست خراج عقیدت پیش کیا اور مرحوم کی پارٹی خدمات کو اُجاگر کیا گیا۔