سوائن فلو میں اضافہ مزید دو مریضوں کی موت

اڑان نیوز
سرےنگر//وادی کشمیر میں سوائن فلو کے دوبارہ دستک کے ساتھ ہی گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران سرینگر کے صورہ اسپتال میں زیر علاج حاملہ خاتون سمیت دو مریضوں کی موت ہوئی جس کے نتیجے میں خنزیری وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد تین تک پہنچ گئی ہے ۔ اس سے قبل 40سالہ شخص کی موت واقع ہوئی ہے ۔ صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ کے سپر انٹنڈنٹ نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے کہاکہ اسپتال میں زیر علاج حاملہ خاتون اور ایک شہری کی سوائن فلو سے موت واقع ہوئی ہے ۔ خنزیری وائرس (سوائن فلو ) نے ایک دفعہ پھر وادی میں دستک دیتے ہوئے گزشتہ تین دنوں کے دوران صورہ اسپتال میں حاملہ خاتون سمیت تین افراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔ معلوم ہوا ہے کہ سرینگر کے مضافاتی علاقے سے تعلق رکھنے والی ایک حاملہ خاتون اسپتال میں زیر علاج تھی تاہم ڈاکٹروں کے پیروں تلے اُس وقت زمین کھسک گئی جب تشخیص کے دوران مذکورہ خاتون کا سوائن فلو ٹیسٹ مثبت آگیا ۔ ذرائع کے مطابق مذکورہ خاتون کو اگر چہ خصوصی وارڈ میں منتقل کیا گیا تاہم خنزیری وائرس مذکورہ شخص کے جسم میں پوری طرح پھیل چکا تھا اور اُس کے جسم کے نازک حصوں نے کام کرنا چھوڑ دیا اوردوروز کے بعد اُس کی صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ میں موت واقع ہوئی ۔اسی دوران معلوم ہوا ہے کہ ایک اور شہری جس کی عمر 60سال کی بتائی جا رہی ہے بھی سوائن فلو میں مبتلا رہنے کے بعد اسپتال میں زندگی کی جنگ ہار گیا ۔ صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ کے سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر امین تابش نے اس کی تصدیق کرتے ہوئے کہاکہ سوائن فلو وائرس کے باعث گزشتہ دو دنوں کے دوران ایک حاملہ خاتون سمیت دو افراد کی موت واقع ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین دنوں کے دوران سوائن فلو کے نتیجے میں اب تک تین افراد کی موت واقع ہوئی ۔اسپتال سپر انٹنڈنٹ کے مطابق سوائن فلو بیماری پر قابو پانے کیلئے اسپتال میں وافر مقدار میں ادویات کا اسٹاک موجود ہے۔ تاہم مریضوں اور تیمارداروں نے الزام لگایا کہ صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ میں سوائن فلو کیلئے کوئی احتیاطی تدابیر نہیں اٹھائے گئے ہیں جس کے نتیجے میں اس مہلک مرض کا شکار افراد موت کو گلے لگانے پر مجبور ہو گئے ہیں۔ اسپتال میں تعینات ایک ڈاکٹر نے بتایا کہ صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ میں سوائن فلو ٹیسٹ کیلئے اگر چہ جدید مشینیں دستیاب ہیں تاہم ٹیسٹ کرانے کیلئے کوئی ماہر موجود نہیں جس کی وجہ سے بیماروں کو مشکلات کا سامنا کرناپڑرہا ہے۔