کشمیر میں آنے والے دنوں میں سردی کی لہر تیز تر ہونے کا امکان: ڈائریکٹر محکمہ موسمیات سری نگر

سری نگر//محکمہ موسمیات سری نگر کے ڈائریکٹر مختار احمد کا کہنا ہے کہ وادی کشمیر میں آنے والے دنوں کے دوران سردی کی لہر تیز تر ہونے کا امکان ہے۔انہوں نے صبح کے وقت گھروں سے نکلنے والے لوگوں خاص کر ٹیویشن کے لئے جانے والے بچوں سے تاکید کی کہ وہ ماسک لگا کر ہی گھروں سے باہر نکلیں۔ان کا کہنا تھا کہ ڈرائیور حضرات کو بھی چاہئے کہ وہ صبح اور شام کے وقت کم روشنی کے پیش نظر گاڑیاں احتیاط سے چلائیں۔موصوف ڈائریکٹر نے جمعہ کے روزبتایا: ‘آنے والے دنوں کے دوران سردی میں مزید اضافہ درج ہونے کا امکان ہے’۔انہوں نے کہا: ‘سری نگر اور ملحقہ علاقوں میں شبانہ درجہ حرارت منفی 6 ڈگری سینٹی گریڈ جبکہ پہاڑی علاقوں میں منفی 7 سے 8 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوسکتا ہے’۔ان کا کہنا تھا کہ وادی میں 24 دسمبر تک دھند جاری سکتی ہے اور پولوشن لوڈ بھی بڑھ سکتا ہے۔مسٹر مختار احمد نے کہا کہ وادی میں صبح اور شام کے وقت روشنی کی کمی کے پیش نظر ڈرائیور حضرات کو گاڑیاں چلانے میں احتتاط سے کام لینا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ صبح اور شام کے وقت گھروں سے نکلنے والوں خاص کر ٹیوشن کے لئے جانے والے بچوں کا ماسک لگا کر باہر نکلنا چاہئے۔ان کا کہنا تھا کہ سردی کی وجہ سے گرمی کے لئے الیکٹرک آلات اور گیس پر چلنے والے ہیٹروں کا بکثرت استعمال کیا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ان آلات کا بکثرت استعمال مختلف حادثات کا باعث بن جاتا ہے لوگوں کو چاہئے کہ ان کا آلات کا استعمال کرتے وقت احتیاط سے کام لیں اور سونے سے قبل ان کے بند کرنے کو یقینی بنائیں۔موصوف ڈائریکٹر نے کہا کہ وادی میں فی الوقت بڑے پیمانے پر موسم خراب ہونے کا کوئی امکان نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ پہاڑی علاقوں میں بھی ابھی نہ ہونے کے برابر برف باری ہوئی ہے۔