کارپوریٹ سیکٹر کو رضا کارانہ طور پر ملک کی ترقی میں تعاون دینا چاہئے: وزیرد فاع راجناتھ

ممبئی//وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے زور دیا کہ کارپوریٹ سیکٹر کو ملک کی ترقی میں رضاکارانہ طور پر تعاون دینا چاہیے۔وہ 9 دسمبر 2023 کو ممبئی، مہاراشٹر میں کارپوریٹ سماجی ذمہ داری (سی ایس آر) ایکسی لینس ایوارڈ کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ وزیر دفاع نے رضاکارانہ شراکت اور قانونی ذمہ داریوں کے درمیان فرق کو اجاگر کیا اور لوگوں سے رابطہ قائم کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ قوم کی فلاح و بہبود کے لیے رضاکارانہ طور پر دیے گئے پانچ روپے بھی ٹیکس کے طور پر ادا کیے گئے 100 روپے سے کہیں زیادہ گہرا رابطہ قائم کرنے کا انتظام کرتے ہیں۔’’کیا ایسا معاشرہ جس میں کوئی سماجی اخلاقیات نہ ہوں، جہاں لوگ صرف قانونی ذمہ داریوں کے تحت کام کرتے ہوں وہ واقعی میں رہنے کے قابل ہے؟‘‘ مسٹر راج ناتھ سنگھ نے اپنے وڑن کا اشتراک کرتے ہوئے پوچھا۔ انہوں نے کہا کہ معاشرے میں بھائی چارے کا مشترکہ احساس ہونا چاہیے جہاں ہر کوئی ایک دوسرے کی مدد کے لیے تیار ہو۔وزیر دفاع نے دوسروں کو آگے آنے اور ملک کی بہتری کے لیے اپنا تعاون کرنے کی ترغیب دینے کی ضرورت پر زور دیا، جبکہ ان شعبوں کے بارے میں بیداری پیدا کی جن پر توجہ کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ لوگوں کو ان مداخلتوں کے بارے میں جاننے کی ضرورت ہے جو معاشرے کو فائدہ پہنچا رہے ہیں اور وہ بھی جو فائدہ نہیں پہنچا رہے ہیں۔ سماجی طور پر باشعور لوگوں بالخصوص کارپوریٹس کی ان کے تعاون کی ستائش کرتے ہوئے انہوں نے ان افراد کو پہچاننا ملک کی ذمہ داری قرار دیا۔مسٹر راج ناتھ سنگھ نے زور دے کر کہا کہ عوام ہوں یا حکومت، بنیادی مقصد ایک بہتر ملک کا قیام ہونا چاہیے۔ انہوں نے سماجی ذمہ داری کی مداخلتوں اور حکومتی پروگراموں کے ہم آہنگی سے فائدہ اٹھانے پر زور دیا۔ وزیر دفاع نے کارپوریٹ سیکٹر پر زور دیا کہ وہ سماجی ذمہ داری کی مداخلتوں کی کارکردگی پر اتنا ہی توجہ دیں جتنا کہ وہ اپنی کمپنی کے لیے وسائل کے مؤثر استعمال پر توجہ دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ بہترین عالمی سی ایس آر طریقوں کو اپنانے میں ہچکچاہٹ محسوس نہ کریں۔ تاہم، انہوں نے ان نظریات کے خلاف احتیاط برتنے کی تاکید کی جن کا مقصد معاشرے کو تقسیم کرنا ہے، یہ کہتے ہوئے کہ انہیں یکسر مسترد کر دینا چاہیے۔