ماہانہ ریڈیو پروگرام ’ من کی بات ‘ ’خواتین ریزرویشن ‘ترقی یافتہ ملک بنانے میںمددگار

The Prime Minister, Shri Narendra Modi addressing a Conclave on “School Education in 21st Century” under the National Education Policy 2020, through video conference, in New Delhi on September 11, 2020.

’’ ملک کی تعمیر میں جب سب کا ساتھ ہوتا تب ہی ترقی ممکن ہوسکتی ہے:وزیر اعظم
نیوز ڈیسک

نئی دہلی/وزیر اعظم نریندر مودی نے پارلیمنٹ اور اسمبلیوں میں خواتین کے لیے ریزرویشن فراہم کرنے والے قانون کی منظوری کو ہندوستانی جمہوریت کی قوت ارادی کی مثال قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے ہندوستان کو ترقی یافتہ ملک بنانے میں مدد ملے گی۔ مودی نیاپنے ماہانہ ریڈیو پروگرام – من کی بات میں اتوار کے روز یوم آئین کی مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی ا?ئین ساز اسمبلی کے معزز ارکان میں 15 خواتین بھی شامل ہیں۔ ان میں سے ایک ہنسا مہتا جی نے خواتین کے حقوق اور انصاف کے لیے ا?واز بلندکی تھی۔ اس دور میں ہندوستان ان چند ممالک میں شامل تھا جہاں خواتین کو ا?ئین کے ذریعے ووٹ کا حق دیا گیا تھا۔انہوں نے کہا، “اب ہندوستان کی پارلیمنٹ نے ناری شکتی وندن ادھینیم پاس کیا ہے جو ہماری جمہوریت کی قوت ارادی کی ایک مثال ہے۔ یہ ترقی یافتہ ہندوستان کے لیے ہمارے عزم کو تیز کرنے میں بھی اتنا ہی مددگار ثابت ہوگا۔وزیر اعظم نے کہا کہ ’’ ملک کی تعمیر میں جب سب کا ساتھ ہوتا تب ہی ترقی ممکن ہوسکتی ہے۔ مجھے اطمینان ہے کہ ا?ئین ہند کے معماروں کے اسی وڑن پر عمل کرتے ہوئے اب ہندوستان کی پارلیمنٹ میں ‘ناری شکتی وندن ادھینیم پاس کیا گیا ہے۔اپنے خطاب میں وزیر اعظم نے ملک میں ڈیجیٹل طریقے سیادائیگی کے بڑھتے ہوئے رجحان، ٹیکنالوجی اور اختراع کی مدد سے نئے ا?ئیڈیاز پر کام کرنے کے لیے نوجوانوں میں کشش اور صفائی کے تئیں عوامی سوچ میں تبدیلی جیسے معاملوں پر بھی روشنی ڈالی۔پانی کے تحفظ کی اہمیت کیمسئلہ پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ 21ویں صدی کے سب سے بڑے چیلنجوں میں سے ایک پانی کے تحفظ کا چیلنج ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ پانی کو محفوظ کرنا زندگی بچانے سے کم نہیں۔ اس کے لیے انہوں نے اجتماعی جذبے سے کام کرنے کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ مل جل کر کام کرنے سے ہی کامیابی ملے گی۔مسٹرمودی نے اس سمت ہر ضلع میں امرت سروور بنانے کے مرکز کے منصوبے کا بھی ذکر کیا۔وزیر اعظم نریندر مودی نے ذہانت، ا?ئیڈیاز اور اختراع کو ملک کے نوجوانوں کی شناخت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس کی وجہ سے ہندوستانیوں کی پیٹنٹ درخواستوں میں 31 فیصد کا اضافہ ہوا ہے، جو کہ ایک بڑی کامیابی ہے.وزیر اعظم نے اتوار کو اپنے ماہانہ ریڈیو پروگرام من کی بات میں کہاکہ “ہمارے نوجوان ساتھیوں نے ملک کو ایک اور بڑی خوشخبری سنائی ہے، جو ہم سب کا سر فخر سے بھرنے والی ہے۔ ذہانت، خیالات اور اختراع ا?ج ہندوستانی نوجوانوں کی پہچان ہیں۔ ٹیکنالوجی کے انضمام کے ذریعے ان کے دانشورانہ املاک میں مسلسل اضافہ ہونا چاہیے جو کہ بذات خود ملک کی صلاحیتوں کو بڑھانے میں ایک اہم پیش رفت ہے۔ ا?پ کو یہ جان کر خوشی ہوگی کہ 2022 میں ہندوستانیوں کی طرف سے پیٹنٹ کی درخواستوں میں 31 فیصد سے زیادہ کا اضافہ ہوا ہے۔ مودی نے کہا کہ ایک عالمی تنظیم نے بہت دلچسپ رپورٹ جاری کی ہے۔ اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پیٹنٹ کی درخواستوں میں سرفہرست دس ممالک میں بھی ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا۔ انہوں نے کہا کہ میں اپنے نوجوان ساتھیوں کو اس شاندار کامیابی پر مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ میں اپنے نوجوان دوستوں کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ملک ہر قدم پر ا?پ کے ساتھ ہے۔ حکومت کی جانب سے کی گئی انتظامی اور قانونی اصلاحات کے بعد ا?ج ہمارے نوجوان نئی توانائی کے ساتھ بڑے پیمانے پر اختراعی کاموں میں لگے ہوئے ہیں، اگر 10 سال پہلے کے اعداد و شمار سے موازنہ کیا جائے تو ا?ج ہمارے پیٹنٹس کی منظوری 10 گنا زیادہ ہو چکی ہے۔ ہم سب جانتے ہیں کہ پیٹنٹس نہ صرف ملک کی دانشورانہ املاک میں اضافہ کرتے ہیں بلکہ اس سے نئے مواقع کے دروازے بھی کھلتے ہیں۔ یہی نہیں بلکہ یہ ہمارے اسٹارٹ اپ کی طاقت اور صلاحیت کو بھی بڑھاتے ہیں۔