متاثرین کو فوری امداد فراہم کی جائے:الطاف بخاری

سرینگر// اپنی پارٹی کے قائد سید محمد الطاف بخاری نے ڈل جھیل میں آج صبح رونما ہونے والی آگ کی خوفناک واردات، جس میں بنگلہ دیش سے تعلق رکھنے والے تین سیاحوں کی موت واقع ہوگئی اور پانچ ہاوس بوٹ اور چھ رہائشی ڈھانچے تباہ ہوگئے ، پر اپنے گہرے دْکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ایک بیان میں سید محمد الطاف بخاری نے اس المناک واقعہ پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا، ’’مجھے یہ جان انتہائی دْکھ اور افسوس ہوا ہے کہ آج علی الصباح جھیل ڈل میں آگ کی ایک خوفناک واردات میں تین غیر ملکی سیاح اپنی متاح جاں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں اور متعدد ہاوس بوٹ اور رہائشی ڈھانچے خاکستر ہوگئے ہیں۔ اس وقت متاثرہ کْنبوں پر کیا بیت رہی ہوگی اور وہ کس کرب سے گزررہے ہوںگے، اس کا بخوبی اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔ اس وقت کوئی بھی الفاظ ان کی ڈھارس بندھانے کیلئے کافی نہیں ہوں گے۔ مہلوکین کے افراد خانہ کے ساتھ میری دلی ہمدردی ہے اور میں دْعا گو ہوں کہ اللہ اْنہیں یہ صدمہ براداشت کرنے کی ہمت عطا کرے۔‘‘متاثرین کے ساتھ اپنی یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے، انہوں نے کہا، ’’دْکھ کی اس گھڑی میں، میں ذاتی طور پر ،اور اپنی پارٹی اس متاثرین کے ساتھ یکجہتی میں کھڑی ہے۔‘‘سید محمد الطاف بخاری نے ایل جی انتظامیہ سے اپیل کی کہ متاثرہ خاندانوں کو فوری ریلیف اور معاوضہ فراہم کیا جائے۔انہوں نے کہا، ’’میں لیفٹیننٹ گورنر کی انتظامیہ سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ متاثرہ کْنبوں کو فوری امداد فراہم کرے اور اس کے بعد انہیں بھر پور معاوضہ فراہم کرتے تاکہ وہ اپنی زندگیوں اور کاروبار کو دوبارہ بحال کرسکیں۔‘‘درایں اثنا پارٹی کے صوبائی صدر کشمیر محمد اشرف میر کی قیادت میں پارٹی لیڈران کا ایک وفد آج علی الصباح موقعہ واردات پر گیا اور نقصانات کا جائزہ لینے کے ساتھ ساتھ متاثرہ کنبوں کی ڈھارس بندھائی۔ اس وفد میں محمد اشرف میر کے علاوہ پارٹی کے جو سرکردہ لیڈران شامل تھے، اْن میں پارٹی کے ضلع صدر سرینگر نور محمد شیخ، یوتھ صدر ضلع سرینگر محسن ظفر شاہ، سینئر نائب صدر ضلع سرینگر جیلانی کمار، یوتھ زونل صدر لالچوک ہلال راک، اور دیگر لیڈران شامل تھے۔