بی آر او نے گاڑیوں کے پہلے قافلے کو شری امرناتھ پوترگھپا تک پہنچا کر تاریخ رقم کی

سری نگر// بارڈر روڈس اہلکاروں نے گاڑیوں کے پہلے قافلے کو شری امرناتھ پوترگھپا تک پہنچا کر تاریخ رقم کی ہے۔بارڈر روڈس آرگنائزیشن (بی آر او) جس کو شری امرناتھ گھپا کے راستوں کی مرمت اور دیکھ ریکھ کی ذمہ داری سونپی گئی، نے اس مشکل کام کی تکمیل کا اعلان کیا ہے۔بی آر او نے ‘ایکس’ پر ایک پوسٹ کے ذریعے جانکاری فراہم کرتے ہوئے کہا: ‘پروجیکٹ بیکن امرناتھ یاترا کے راستوں کی بحالی و بہتری میں مصروف ہے’۔انہوں نے کہا: ‘بارڈر روڈ اہلکاروں نے گاڑیوں کے پہلے قافلے کو پوتر گھپا تک پہنچا کر اس مشکل کام کو مکمل کرکے تاریخ رقم کی’۔بی آر او کے ایک عہدیدار نے مزید تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا: ‘ہم ایک ٹرک اور ایک چھوٹی پک اپ گاڑی لے کر ضلع گاندربل کے ڈومیل سے بالتل بیس کیمپ کے راستے، جو امرناتھ گھپا تک پہنچانے والے راستوں میں سے ایک راستہ ہے، سے پوتر گھپا تک پہنچے’۔انہوں نے کہا کہ بی آر او نے ان گاڑیوں کو امر ناگھ گھپا کے نزدیک جاری کام کے لئے استعمال کیا۔ان کا کہنا تھا: ‘یہ گاڑیاں گھپا تک بہت سارے سٹور لے جانے کے لئے وہاں گئی تھیں جہاں کافی مستقل کام انجام دینا ہے’۔موصوف عہدیدار نے کہا کہ یقینی طور پر ایک بہت ہی بڑی کامیابی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے تمام تر وسائل کو بروئے کار لایا کیونکہ ہم برف باری سے پہلے ہی یہاں پہنچنا چاہتے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ فی الوقت سنگم بیس سے براستہ بالتل قریب 13 کلو میٹر سڑک کو کشادہ کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس سے شری امرناتھ یاترا یاترا کے لئے یاتریوں کو بہت کم وقت لگے گا۔بتادیں کہ شری امرناتھ گھپا جنوبی کشمیر کے ہمالیہ پہاڑیوں پر سطح سمندر سے 3 ہزار 8 سو 80 میٹر کی بلندی پر واقع ہے۔اس پوتر گھپا کی یاترا ہندو مذبب میں انتہائی اہمیت کی حامل ہے اور ہر سال اس مقدس گھپا کی یاترا کے لئے ملک بھر سے ہزاروں کی تعداد میں یاتری آکر اس کا درشن کرتے ہیں۔امسال زائد از ساڑھے چار لاکھ یاتریوں نے پوتر گھپا کا درشن کیا۔ یہ یاترا یکم جولائی سے شروع ہو کر 31 اگست کو اختتام پذیر ہوئی۔یہاں پر یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ سال رواں کے ماہ اپریل میں مرکزی وزیر ٹرانسپورٹ اور ہائی ویز نتن گڈ کری نے اعلان کیا تھا کہ پہلگام میں پوتر گھپا کی طرف جانے والے 110 کلو میٹر طویل امرناتھ مرگ کو قریب 53 سو کروڑ روپیوں کی لاگت سے تعمیر کیا جائے گا تاکہ شری امرناتھ جی کے یاتریوں کو سہولیت پہنچ سکے۔یو این آئی