جنگجوئوں کو پناہ دینے کاالزام اونتی پورہ میں رہائشی مکان قرق: پولیس

یو این آئی
اونتی پورہ// جموں وکشمیر پولیس نے جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے اونتی پورہ علاقے میں جنگجوئوں کو پناہ دینے کے الزام میں ایک رہائشی مکان کو قرق کر دیا۔ایک پولیس ترجمان نے اپنے ایک بیان میں تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ پلوامہ کی ایک خصوصی عدالت کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئے اونتی پورہ پولیس اور علاقائی مجسٹریٹ نے مل کر گائوں کے معززین کی موجودگی میں بیگ پورہ اونتی پورہ میں آزاد احمد تیلی کے رہائشی مکان کو قرق کر دیا۔انہوں نے کہا کہ اس جائیداد کو یو اے پی اے ایکٹ کے سکیشن 33 کے تحت منسلک کیا گیا۔موصوف ترجمان نے کہا کہ اس جائیداد کے مالک آزاد احمد تیلی کو اونتی پورہ پولیس اسٹیشن میں درج ایف آئی آر نمبر 58/2020 میں گرفتار کیا گیا تھا۔انہوں نے کہا: ‘مذکورہ مالک جائیداد پر غیرقانونی سرگرمیوں کے (روک تھام) ایکٹ یو اے پی اے کی دفعہ 19 کے تحت دو مہلوک دہشت گردوں جن میں اس وقت کا کالعدم تنظیم حزب المجاہدین کا خود ساختہ چیف کمانڈر ریاض احمد نائیکو عرف زبیر الاسلام بھی شامل تھا، کو جان بوجھ کر پناہ دینے کا الزام ہے۔پولیس نے اپنے بیان میں لوگوں سے ملی ٹنٹوں کو پناہ نہ دینے کی اپیل دہراتے ہوئے کہا ہے: ‘ایسا کرنے کی صورت میں لوگوں کی منقولہ و غیر منقولہ جائیدادوں کو ضبط کیا جائے گا اور اس کے علاوہ تحت قانون کارروائی بھی عمل میں لائی جائے گی’۔