: گلمرگ میں سرمائی سیاحت کے پیش نظر تمام تر تیاریوں کا عمل عروج پر

سری نگر// وادی کشمیر کے شہرہ آفاق سیاحتی مقام گلمرگ میں سرمائی سیاحت کے پیش نظر جہاں تمام تر انتظامات کو حتمی شکل دی جا رہی ہے وہیں دوسری طرف ان تمام امکانات و مواقع کو تلاش کیا جا رہا ہے جو سیاحوں کے لئے خوشگوار یادوں کا باعث بن جائیں گے۔محکمہ سیاحت تمام متعلقہ محکموں بشمول گلمرگ ڈیولوپمنٹ اتھارٹی، جے کے ٹی ڈی سی، یوتھ سرووسز اینڈ سپورٹس، کیبل کار کارپوریشن، پی ڈی ڈی، آر ینڈ بی جل شکتی وغیرہ کے ساتھ سرمائی سیاحت میں چار چاند لگانے کے لئے تیاریوں کو مکمل کرنے میں جٹا ہوا ہے۔گلمرگ میں مشتاق الحسن نامی ایک ہوٹل مالک نے یو این آئی کو بتایا کہ گلمرگ میں سرمائی سیاحت کے پیش نظر متعلقہ حکام تمام تر تیاریوں کو حتمی شکل دینے میں انتہائی مصروف ہیں۔انہوں نے کہا کہ سال گذشتہ بھی سرما میں یہاں کافی تعداد میں سیاح آئے یہاں تک کہ ہوٹلوں میں تک دھرنے کی بھی جگہ نہیں تھی اور امسال اس سے بھی زیادہ امید ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سرما میں یہاں سیاحوں کا سال کے باقی مہینوں سے بھی زیادہ رش رہتا ہے جس سے اس شعبہ سے وابستہ لوگوں کی سخت سردیوں میں بھی روزی روٹی کی سبیل ہوتی ہے۔موصوف ہوٹل مالک نے کہا کہ حکومت سرمائی سیاحت کو فروغ دینے کے لئے وسیع پیمانے پر کام کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ سرما میں سیاحوں کو تمام ترسہولیات بہم پہنچانے کے لئے بھی طرح طرح کے انتظامات کئے جاتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ سیاحوں کے قیام و طعام کے لئے ہوم سٹے کا بھی بندوبست کیا گیا ہے۔دریں اثنا سکریٹری ٹورزم ڈاکٹر سید عابد رشید نے حال ہی میں تمام افسروں سے تاکید کی ہے کہ وہ سرمائی سیاحت کے دوران سیاحوں کو تمام سہولیات کی دستیابی کو ہر حال میں یقینی بنائیں۔ انہوں نے افسروں کو ہدایت دی کہ وہ گلمرگ میں بنیادی سہولیات کا آڈٹ کرکے خامیوں کو دور کریں۔انہوں افسروں سے کہا کہ گلمرگ میں موسم سرما کے دوران سیاحتی سرگرمیوں کے احسن انعقاد کے لئیہوٹل مالکان، گھوڑے بانوں، ٹرانسپورٹروں اور دیگر متعلقین کے ساتھ میٹنگیں کریں۔موصوف سکریٹری سیاحت نے گلمرگ میں سرمائی سیاحت کے امکانات کو تلاش کرنے پر زور دیا اور افسروں سے تاکید کی کہ وہ گلمرگ میں ٹریفک کی ہموار نقل و حمل کے علاوہ ٹنگمرگ میں پارکنگ سہولیات کو یقینی بنائیں۔انہوں نے تمام محکموں سے مربوط تعاون طلب کیا تاکہ سیاح خوشگوار یادیں لے کر واپس جا سکیں۔تمام متعلقہ محکموں پر مشتمل ایک مشترکہ کنٹرول روم قائم کرنے کی بھی ہدیات دی گئیں۔حکام کے مطابق امسال جموں وکشمیر میں ریکارڈ تعداد میں سیاحوں کی آمد متوقع ہے۔سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سال رواں کے ماہ اگست تک ایک کروڑ 52 لاکھ سیاحوں نے جموں وکشمیر کی سیر کی ہے جبکہ سال گذشتہ کل ایک کروڑ 88 لاکھ سیاح یہاں آئے تھے۔ان کا کہنا ہے کہ امسال سیاحوں کی تعداد سوا دو سو کروڑ سے تجاوز کرنے کا امکان ہے۔حکام کے مطابق حکومت 75 نئے سیاحتی مقامات کو فروغ دے رہی ہے جہاں تمام تر ضروری انفراسٹرکچر کو دستیاب رکھا جائے گا۔ان کا کہنا ہے کہ سری نگر میں جی ٹونٹی ٹورزم اجلاس کے انعقاد کے بعد غیر ملکی سیاحوں کی تعداد میں بھی اضافہ درج ہوا ہے۔قابل ذکر ہے کہ وادی کشمیر موسم سرما کے دوران بھی سیاحت کے لئے موزوں ترین جگہ ہے یہاں کے برف پوش پہاڑ سیاحوں کو گرم علاقوں سے یہاں برف باری سے لطف اندوز ہونے کے لئے کھینچ کر لاتے ہیں۔