‘نمو بھارت ‘ مستقبل کے ہندوستان کی ایک جھلک :وزیر اعظم مودی

غازی آباد//ملک کی پہلی ریپڈ ایکس ٹرین ‘نمو بھارت’ کو قوم کے نام وقف کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعہ کو کہا کہ یہ ٹرین مستقبل کے نئے ہندوستان کی ایک جھلک پیش کرتی ہے۔صاحب آباد سے دوہائی ڈپو تک RapidX ٹرین سروس کو جھنڈی دکھا کر ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ نمو بھارت ٹرین نئے ہندوستان کی شناخت پیش کر تی ہے۔ آج زندگی کا ہر شعبہ تیزی سے ترقی کر رہا ہے۔ نمو بھارت ٹرین نئے ہندوستان کی پہچان ہے۔ یہ پورے ملک کے لیے ایک تاریخی لمحہ ہے۔ انہوں نے اہل وطن سے یہ عہد بھی لیا کہ ریلوے ان کی ملکیت ہے اور وہ اسے کسی بھی صورت میں نقصان نہیں پہنچائیں گے اور نہ ہی کسی کو ایسا کرنے دیں گے۔اپوزیشن پارٹیوں پر طنز کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا “تقریباً چار سال پہلے میں نے دہلی-غازی آباد-میرٹھ ریجنل کوریڈور پروجیکٹ کا سنگ بنیاد رکھا تھا۔ آج صاحب آباد سے دوہائی ڈپو تک سیکشن پر ’نمو بھارت‘ کا آپریشن شروع ہو گیا ہے۔ ہم جس کا سنگ بنیاد رکھتے ہیں اس کا افتتاح بھی کرتے ہیں۔ اس کا میرٹھ تک کا حصہ اگلے ڈیڑھ سال بعد مکمل ہو گا، اس وقت میں بھی آپ کی خدمت میں حاضر ہوں گا۔ ,مسٹر مودی نے کہا ’’صدی کا تیسرا عشرہ ہندوستانی ریلوے کی بحالی کی دہائی ہے۔ آپ ان دس برسوں میں پوری ریلوے کو بدلتے ہوئے دیکھیں گے۔ مجھے چھوٹے چھوٹے خواب دیکھنے کی عادت نہیں اور نہ ہی مرتے ہوئے پھرنے کی عادت ہے میں آج کی نوجوان نسل کو ضمانت دینا چاہتا ہوں کہ دہائی کے آخر تک ہندوستان کی ٹرینیں دنیا کے کسی بھی ملک سے پیچھے نہیں رہیں گی۔ حفاظت، سہولت، صفائی، ہم آہنگی، حساسیت اور مضبوطی کی بنیاد پر ہندوستانی ریلوے دنیا میں ایک نیا مقام حاصل کرے گی۔وزیر اعظم نے کہا “ہندوستانی ریلوے 100 فیصد برقی کاری کے ہدف سے زیادہ دور نہیں ہے۔ آج نمو بھارت شروع ہوا ہے۔ اس سے پہلے ملک کو وندے بھارت کی شکل میں ایک جدید ٹرین ملی تھی۔ ملک میں ملٹی ماڈل ٹرانسپورٹ سسٹم پر بھی تیز رفتاری سے کام جاری ہے۔ نقل و حمل کے ذرائع کو آپس میں جوڑا جا رہا ہے۔ ’نمو بھارت‘ میں اس کا خیال رکھا گیا ہے۔ یہ ٹرین میرٹھ، غازی آباد میٹرو اور بس اسٹینڈ کو جوڑے گی۔ اب مسافروں کو ٹرین سے اترنے کے بعد گھر اور دفتر جانے کے لیے کوئی اور ذریعہ تلاش کرنے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔مسٹر مودی نے کہا کہ بدلتے ہندوستان میں ہم وطنوں کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کی حکومت کی کوشش ہے۔ لوگوں کو صاف ہوا میں سانس لینا چاہیے۔ کچرے کے ڈھیروں کو ہٹا دیں، ٹرانسپورٹ کے اچھے ذرائع ہوں اور علاج کا اچھا انتظام ہونا چاہیے۔ ,وزیراعظم نے کہا کہ آج ہندوستان کی پہلی تیز رفتار ریل سروس ‘نمو بھارت ٹرین’ قوم کے نام وقف کر دی گئی ہے۔ ہمارے یہاں نوراتری کے دوران نیک کام کرنے کی روایت ہے۔ ملک کی پہلی نمو بھارت ٹرین کو بھی ماں کاتیانی کا آشیرواد حاصل ہوا ہے۔ اس نئی ٹرین میں ڈرائیور سے لے کر تمام ملازمین خواتین ہیں۔ یہ ہندوستان کی خواتین کی طاقت کے بڑھتے قدم کی علامت ہے۔ نمو بھارت ٹرین میں جدیدیت کے ساتھ ساتھ رفتار بھی ہے۔ یہ نمو بھارت ٹرین نئے ہندوستان کے نئے سفر اور نئی قراردادوں کا تعین کر رہی ہے۔وزیر اعظم نے کہا ‘‘آج کا ہندوستان ایشیائی کھیلوں میں 100 سے زیادہ تمغے جیت کر اپنی صلاحیتوں کے جوہر دکھاتا ہے۔ آج کا ہندوستان اپنے طور پر 5G لانچ کرتا ہے اور اسے ملک کے ہر کونے میں لے جاتا ہے۔ “آج کے ہندوستان میں دنیا میں ڈیجیٹل لین دین کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔”مسٹر مودی نے کہا کہ آج بنگلور میں دو میٹرو لائنیں بھی ملک کو وقف کر دی گئی ہیں۔ اس سے بنگلورو کے آئی ٹی ہب کے رابطے میں مزید بہتری آئی ہے۔ بنگلورو میں ہر روز تقریباً آٹھ لاکھ لوگ میٹرو سے سفر کر رہے ہیں۔ 21ویں صدی کا ہمارا ہندوستان ہر میدان میں ترقی کی نئی داستان لکھ رہا ہے۔ آج کا ہندوستان چندریان کو چاند پر اتار کر دنیا میں مشہور ہوگیا ہے۔ آج کا ہندوستان اس طرح کے ایک عظیم الشان G20 کے انعقاد سے دنیا کے لیے کشش اور تجسس کا ذریعہ بن گیا ہے اور دنیا کے لیے ہندوستان سے جڑنے کا ایک نیا موقع ہے۔وزیراعظم نے کہا “آج جس تیز رفتار سے نمو بھارت کا آغاز ہوا ہے، وہ میڈ ان انڈیا ہے، یہ ہندوستان کی اپنی ٹرین ہے۔ اب پلیٹ فارم پر اسکرین ڈور سسٹم لانچ کیا گیا ہے، وہ بھی میڈ ان انڈیا ہے۔ نمو بھارت مستقبل کے ہندوستان کی ایک جھلک ہے۔ نمو بھارت اس بات کا بھی ثبوت ہے کہ جب ملک کی معاشی طاقت بڑھتی ہے تو ہمارے ملک کی تصویر کیسے بدل جاتی ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ اب مجھے اس جدیدترین ٹرین میں سفر کرنے کا تجربہ بھی ملا ہے۔ میں نے اپنا بچپن ریلوے پلیٹ فارم پر گزارا ہے اور آج ریلوے کی یہ نئی شکل مجھے سب سے زیادہ خوش کرتی ہے۔ ,اس سے پہلے اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ وندے بھارت نے ہمیں نئے ہندوستان کی جھلک دکھائی ہے۔ آج ملک کی سب سے زیادہ آبادی والی ریاست نئے انفراسٹرکچر کا مشاہدہ کر رہی ہے۔ یہ ڈبل انجن والی حکومت کی کوشش ہے کہ آج یوپی کے پانچ شہروں میں میٹرو ریل خدمات ہیں۔ جنوری میں آگرہ میں میٹرو ریل خدمات بھی شروع ہو جائیں گی۔ وارانسی میں بھی روپ وے سروس کی تعمیر کا کام جاری ہے۔یو این آئی