بندوق کی نوک پر دکاندار کی لوٹ کھٹوعہ میں لیٹروں کی شبانہ کارروائی

Reading Time: 2 minutes

اُڑان نیوز
کٹھوعہ //کٹھوعہ میں لٹیروں نے بندوق کی نوک پر ایک تاجر کی دکان میں گھس کر ایک لاکھ روپے نقدی لوٹ کر فرار ہوئے ۔ پولیس نے اس معاملے کے حوالے سے رپورٹ درج کر کے تحقیقات شروع کردی ۔
کل دیر رات یہاں چڈوال کے قریب تین نقاب پوش نوجوانوں نے کجاریا ہارڈ ویئر اسٹور سے گن پوائنٹ پر ایک لاکھ روپے لوٹ لئے۔اطلاعات کے مطابق تین موٹرسائیکل سوار نوجوان جو ماسک پہنے ہوئے تھے، دو دیسی ساختہ پستول اور تیز دھار ہتھیار لے کر چڈوال کے کجاریا ہارڈ ویئر اسٹور کے اندر گھس آئے اور اس کے مالک موہت گپتا کو پستول دکھا کر دھمکی دی اور ایک لاکھ روپے کی نقدی لوٹ لی۔ہارڈویئر سٹور کے مالک نے بتایا کہ جب وہ رات کو دکان بند کر کے اپنے گھر کی طرف روانہ ہونے والا تھا کہ تین نقاب پوش اس کی دکان میں گھس آئے اور دو دیسی ساختہ پستول اور ہاتھ میں دھار دار ہتھیار لیے ہوئے اس پر پستول رکھ دیا۔ دکان سے ایک لاکھ روپے کی نقدی لوٹ لی۔تاہم انہوں نے ڈیلر کو نقصان نہیں پہنچایا۔ ڈاکو نقدی لوٹنے کے بعد موٹر سائیکل پر موقع سے فرار ہو گئے۔
ذرائع نے بتایا کہ ہارڈویئر اسٹور جو جموں-پٹھانکوٹ قومی شاہراہ پر چڈوال پل کے قریب واقع ہے، چڈوال پولیس اسٹیشن سے مشکل سے ہی ایک فرلانگ دور ہے۔واقعہ کے فوری بعد چڈوال پولیس ایس ایچ او اور ایف ایس ایل کی ٹیم کی قیادت میں موقع پر پہنچ گئی اور شواہد اکٹھے کئے۔ انہوں نے سی سی ٹی وی فوٹیج بھی اکٹھی کی اور فنگر پرنٹس بھی لیے۔ پولیس نے ڈیلر کا بیان بھی ریکارڈ کر لیا۔
ایس ایس پی کٹھوعہ شیودیپ سنگھ نے کہا کہ پولس معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے اور جلد ہی اسے کوئی پیش رفت ملے گی۔ خیال رہے کہ دو سال قبل کٹھوعہ ضلع کے کوٹہ موڑ میں پنجاب کے تین نوجوانوں نے تیز دھار ہتھیار لے کر سونے کے اسمتھ کو لوٹ لیا تھا۔ ان میں سے دو ڈاکو چند ہی دنوں میں پولیس نے گرفتار کر لیے جبکہ تیسرے کو بعد میں پنجاب سے گرفتار کر لیا گیا۔اس کے علاوہ ایک سال پہلے کٹھوعہ میں ایک بینک کو لوٹا گیا تھا اور سینے سے 1.25 کروڑ روپے لوٹ لیے گئے تھے۔ تاہم بعد میں پولیس نے ڈکیتی کو ناکام بنا دیا۔