’صدر راج ‘کا واضح اثر یومِ جمہوریہ تقریب میں نظر آیا!

’صدر راج ‘کا واضح اثر یومِ جمہوریہ تقریب میں نظر آیا!
الطاف حسین جنجوعہ
جموں//جموں میں یومِ جمہوریہ ہند کے موقع پر منعقدہ ریاستی سطح کی سب سے بڑی تقریب میں ’صدر راج ‘کا اثر واضح طور دیکھنے کو ملا۔اسٹیڈیم میں موجود شائقین کو بخوبی اس بات کا احساس ہوا کہ اس وقت ریاست کا قلی کنٹرول مرکزی سرکار کے ہاتھ میں ہے۔ عمومی طور پر ریاست کے گورنر یومِ جمہوریہ تقریب پرجموں وکشمیر کی سرکاری زبان اردومیں خطاب کرتے ہیں لیکن اس مرتبہ گورنر ستیہ پال ملک نے خالص ہندی میں خطاب پڑھا۔پریڈ کا معائنہ کرنے کے دوران عمومی طور جموں وکشمیر پولیس کے سربراہ گورنر موصوف کے ساتھ ہوا کرتے تھے لیکن اس مرتبہ فوج کے اعلیٰ عہدادران ان کے ہمراہ تھے۔مارچ پاسٹ میں سرفہرست جموں وکشمیر پولیس ہوا کرتی تھی جوکہ اس مرتبہ پانچویں نمبر پر تھی۔ اس مرتبہ پریڈ میں پنجاب پولیس کی ٹکڑی نے حصہ لیکر اول پوزیشن حاصل کی۔پریڈ کا آغاز کرتے وقت بھارت ماتا کی جے کے فلک شگاف نعرے بلند ہوئے جوکہ اس سے پہلے کم ہی دیکھنے کو ملا کرتاتھا۔ کلچرل پروگرام کے دوران بھی اسکولی بچوں نے بارہا ’بھارت ماتا کی جے‘کے نعرے بلند کئے۔تقریب میں ماسوائے بھارتیہ جنتاپارٹی دیگر سیاسی جماعتوں کے سنیئرلیڈران کم ہی دکھائی دیئے۔ سابقہ وزرا عمر عبداللہ، محبوبہ مفتی وغیرہ میں سے کوئی تقریب میں شامل نہ تھا۔ زعفرانی رنگ کی جھلک زیادہ دیکھنے کو ملی۔