ملوثین کی گرفتاری تک کچھ نہیں کہہ سکتے:ڈی جی پی

اُڑان نیوز
سرینگر//داعش کی جانب سے صورہ حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کے بعد پولیس سربراہ کا کہنا ہے کہ جب تک نہ ملوث افراد کو گرفتار کیا جائے تب تک یہ نہیں کہا جاسکتا ہے کہ وادی کشمیر میں داعش نے پیر جمائے ہیں۔ صورہ میں پولیس اہلکار پر فائرنگ کرنے کے بعد اُس کی رائفل چھیننے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی ہے اور مہلوک اہلکار سے چھینی گئی رائفل کی تصویر داعش کی وئب سائٹ’ عمق‘پر ہے جہاں اس سے نمائش کے طور پر رکھا گیا ہے ۔پولیس سربراہ ڈاکٹر شیش پال وید نے کہا چونکہ رائفل کی تصویر ان کی ویب سائٹ پر ہے اور وہ اس کی ذمہ داری قبول کررہے ہیں ۔ہماری طرف سے جب تک ملوثین کو گرفتار نہیں کیا جاسکتا ،ہم کچھ نہیں کہہ سکتے ۔