تعلیمی سیکٹر میں نیا پن لانے کیلئے لائحہ عمل کو حتمی شکل حکومت بہتری لانے کےلئے مو¿ثر طریقہ کار اپنانے پر وعدہ بند:الطاف بخاری

جموں//تعلیم کے وزیر سید محمد الطاف بخاری نے ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کے دوران سکولی تعلیم سیکٹرمیں نیاپن لانے کے لئے لائحہ عمل کو حتمی شکل دی۔میٹنگ میں سکولی تعلیم محکمہ کے سینئر افسران جن میں فاروق احمد شاہ ، ایڈیشنل سیکرٹری مسرت الاسلام ، ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن جموں رویندر سنگھ ، ڈائریکٹر ایس ایس اے اے آر وار ، ڈائریکٹر رمسا طفیل متو و دیگر سینئر افسران شامل تھے نے سکولوں میں عملے کی ضروریات ، بنیادی ڈھانچے کی ترقی دینے اور موجودہ سکیم کے تحت ضروریات پوری کرنے کے معاملات پر غور و خوض کیا۔ میٹنگ میں التوا میں پڑے بقایاجات کو پور ا کرنے اور اساتذہ ، ماسٹر وں و دیگر عملے کی تنخواہوں کو ادا کرنے جیسے معاملات زیر بحث آئے ۔وزیر نے محکمہ کے تمام شعبوں کے سربراہوں سے کہا کہ وہ سکولی تعلیم سیکٹر کے روڑ میپ کے فائنل ڈرافٹ کو وزیرا علیٰ کو پیش کرنے سے پہلے اچھی طرح جانچ لیں۔انہوںنے افسروں سے کہا کہ وہ اَپ ڈیٹیڈ اکاؤنٹ بکس پیش کریں ۔انہوں نے کہاکہ محکمہ کی طرف سے ریاست کے تئیں یہ ایک بڑی خدمت ہوگی اگر ہم تعلیمی نظام کو ہمیشہ کے لئے بہتر طریقے سے ترتیب دیں۔وزیر نے کہاکہ حکومت کی پہلی ترجیحات میں تمام سکولوں کو ضروری بنیادی ڈھانچے سے لیس کرنا شامل ہے اور نظام کو از سر نو تشکیل دے کر تمام سطحوں پر موجود خامیوں کو دور کرنا ہوگا۔وزیرموصوف نے مزید کہا کہ سکولوں ، ہوسٹلوں ، ڈائیٹ آڈیٹیوریم و دیگر عمارات کی تعمیر میں حائل رُکاوٹوں کو دور کرنا انتہائی ضروری ہے بلکہ کچھ عمارتوں کو از سرنو تعمیر کرنا اور اَپ گریڈ کرنے کی ہدایات بھی انہوںنے متعلقین کو دیں۔انہوںنے کہاکہ حکومت تمام سکولوں کو اپنی عمارت میں منتقل ہونے جہاں پانی، بیت الخلاءاور صحت و صفائی کی سہولیات موجود ہوں کی وعدہ بند ہے ۔