اڑان نیوز سرینگر// ہندواڑہ کے گنڈ کامل کرالہ گنڈ علاقہ میں جنگجوؤں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعدفورسز نے اتوار کے روز بڑے پیمانے پر آپریشن شروع کیا ۔ دفاعی ذرائع کے مطابق علاقہ میں تلاشی آپریشن جاری ہے کیونکہ پاس کے جنگلوںمیں جنگجوؤں کی موجودگی کی اطلاع ملی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ 30آر آر ، ایس او جی ہندواڑہ نے مصدقہ اطلاع ملنے کے بعد گنڈ کامل کرالہ گنڈ علاقوں کو محاصرے میں لے کر لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی ۔ ذرائع کے مطابق پولیس وفورسز کی بھاری جمعیت نے کئی علاقوں کو محاصرے میں لے کر بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا ۔ مقامی ذرائع نے بتایا کہ رہائشی علاقوں کے ساتھ ساتھ جنگلوں کو بھی فورسز نے محاصرے میں لے کر تلاشی آپریشن شروع کیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ سیکورٹی فورسز کو مصدقہ اطلاع موصول ہوئی ہے کہ کرالہ گنڈ کپواڑہ میں عسکریت پسند چھپے بیٹھے ہیں۔ دفاعی ذرائع کے مطابق کرالہ گنڈ کپواڑہ اور اس کے ملحقہ علاقوں میں بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا گیا ہے۔ دفاعی ذرائع کے مطابق مصدقہ اطلاع ملی ہے کہ گاؤں میں جنگجو چھپے بیٹھے ہیں جنہیں مار گرانے کیلئے آس پاس علاقوں کو سیل کرکے لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ دفاعی ذرائع نے مزید بتایا کہ ممکنہ طور پر دراندازی کے ذریعے عسکریت پسند اس طرف آنے کو خارج از امکان قرار نہیں دیاجاسکتا ہے۔ دریں اثنا پلوامہ کے دیہی علاقوں میں دوسرے روز بھی جنگجو مخالف آپریشن جاری رہا جس دوران لوگوں کے شناختی کارڈ باریک بینی سے چیک کئے گئے ۔ ذرائع نے بتایا کہ دربگام پلوامہ میں عسکریت پسندوں کے ساتھ رابط رکھنے کی پادائش میں ایک نوجوان کو چھاپہ مار کارروائی کے دوران گرفتار کیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق چھاپہ مار کارروائی کے دوران گرفتار نوجوان کی شناخت ندیم ڈار ولد نذیر احمد کے بطور ہوئی ہے۔ دریں اثنا سیکورٹی فورسز نے اور چرسو اپلوامہ میں درمیانی رات کو چھاپہ مار کارروائی کے دوران دو نوجوانوں کو گرفتار کیا ۔ ذرائع نے گرفتار نوجوانوں کی شناخت اعجاز احمد مری ولد عبدالحمید اورمحمد اسحاق میر ولد عبدالمجید میر کو گرفتار کیا ۔ معلوم ہوا ہے کہ دونوں سگے بھائی ہے۔ گرفتاریوں کے خلاف پلوامہ میں لوگوں نے احتجاجی مظاہرئے کئے اور الزام لگایا کہ جرم بیگناہی کے الزام میں نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

شقمرالدین منہاس
رام بن// رام سو کے علاقہ چکا گاؤں میںآگ کی ا یک ہولناک واردات میں دوکان سمیت ایک رہائشی مکان جل کر خاکستر ہو گیا ۔
نقصان کا تخمینہ لاکھوں روپے میں ہے ۔ ذرائع کے مطابق ہفتہ اور اتوار کی درمیانی شب چکا گاؤں کے گلزار احمد ولد عبدلرشید کٹوچ کی دوکان میں اچانک آگ نمودار ہوئی جس نے کچھ ہی دیر میں خود اس کے اور اس کے بھائی ماسٹر محمد شاہین کے رہائشی مکان کو بھی لپیٹ میں لے لیا ۔
اگر مقامی لوگوں نے اطلاع ملتے ہی وہاں پہنچ کر آگ بجھانے کی کوشش کی ۔ ذرائع کے مطابق اگر چہ لوگوں کی کوششوں سے آگ پھیلنے سے روک دی گئی کیونکہ مزید مکانات کے لپیٹ میں آنے کا خدشہ تاہم گلزار احمد کی دوکان تمام سامان سمیت مکمل طور پر خاکستر ہوگئی ۔ماسٹر محمد شاہین کے رہائشی مکان کی دوسری منزل بھی سامان سمیت راکھ ہو گئی تاہم ایک منزل بچا لی گئی ۔نقصان کا تخمینہ لاکھوں روپے لگایا گیا ہے ۔بھی تک آگ لگنے کی وجوہات معلوم نہیں ہو پائی ہیں ۔ اتوار کے روز انتظامیہ اور پولیس کی ٹیمیں بھی جائے واردات پر پہنچیں اور نقصان کا جائزہ لیا ۔ اس سلسلہ میں رامسو تھانہ میں کیس درج کے تحقیقات شروع کر د گئی ہے ۔