الطاف بخاری نے سکول تعلیم محکمہ کی حصولیابیوں اور کارکردگی کا جائزہ لیا

جموں//تعلیم کے وزیر سید محمد الطاف بخاری نے کل ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کے دوران سکولی تعلیم کے محکمے کی کارکردگی اور حصولیابیوں کا جائیزہ لیا ۔ اس موقعہ پر خطاب کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ حکومت کی پہلی ترجیحات میں تمام سکولوں کو کم سے کم بنیادی ڈھانچے سے لیس کرنا ہو گا اور تعلیمی نظام میں ہر سطح پر موثر طریقے پر آگے چلانے کا اہتمام کرنا ہو گا ۔ یہ میٹنگ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی 23 فروری کو ہونے والی میٹنگ کے سلسلے میں منعقد کی گئی ۔ جس میں سیکرٹری سکول ایجوکیشن فاروق احمد شاہ ، ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن جموں رویندر سنگھ ، ڈائریکٹر ایس ایس اے اے آر وار ، ڈائریکٹر رمسا طفیل متو ، چیف انجینئر آر اینڈ بی جموں و دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی ۔ ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن اور آر اینڈ بی افسران کشمیر نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کی ۔ وزیر نے سکولی عمارتوں پر جاری کام کو مکمل کرنے کیلئے 25 فروری کی تاریخ مقرر کی ۔ انہوں نے متعلقہ افسران سے کہا کہ ایس ایس اے ، رمسا، سٹیٹ کیپکس بجٹ اور تعمیر سکیموں پر اپ گریڈیشن کا کام شروع کیا جائے ۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ 72 گرلز ہوسٹلوں پر کام شدو مد سے جاری ہے اور چند ایک عمارتوں کا کام اراضی کے تنازعوں کی وجہ سے رُکے پڑے ہیں ۔ وزیر نے اس سلسلے میں افسروں کو ہدایت دی کہ ان عمارتوں کی تعمیر فوراً شروع کرنے کیلئے تمام حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے اقدامات کریں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت تمام سکولوں کو اپنی عمارتیں فراہم کرنے اور بچوں کیلئے پینے کا پانی ، بیت الخلاء اور صفائی ستھرائی کا انتظام بھی یقینی بنایا جائے۔