میوہ صنعت کو ترقی دینے کیلئے کئی اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں : بشارت بخاری

جموں//باغبانی کے وزیر سید بشارت بخاری نے ایوان میں کہا کہ کشمیر وادی میں میوہ صنعت کو ترقی دینے کیلئے کئی اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں اور اس عمل میں کلگام ضلع بھی شامل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ نے میوہ صنعت کو ترقی دینے کے سلسلے میں کئی پروگراموں کو متعارف کیا ہے ۔ رُکنِ اسمبلی عبدالمجید پڈر کے ایک سوال کے جواب میں وزیر نے کہا کہ محکمہ نے باغبانی سیکٹر کے تحت پرانے اور نئے میوہ باغات کو نئی جہت بخشنے کیلئے ہائی ڈینسٹی لانٹیشن کو متعارف کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں میوہ درختوں کو آبپاشی کی سہولیات فراہم کرنے کیلئے بھور ویل ، ٹیوب ویل اور واٹر ہارویسٹنگ ٹینک تعمیر کی جا رہی ہیں اس کے علاوہ پیکنگ ہاوسز کو بھی ترقی دی جا رہی ہے تا کہ باغبانی کی فصل کو سائینسی بنیادوں پر تیار کیا جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کو ٹریکٹر ، ٹلر اور موٹر پاور سپرئیریر بھی فراہم کئے جاتے ہیں ۔ وزیر نے کہا کہ باغبانی کی پیداوار کو مارکیٹنگ کی سہولیات فراہم کرنے کیلئے سیٹلائیٹ اور اپنی منڈی کو ترقی دی جا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نئے کارخانہ داروں کو سبسڈی کی سہولیت بھی فراہم کی جاتی ہے اس کے علاوہ سی اے سٹور اور پیکنگ یونٹ بھی تیار کئے جا رہے ہیں تا کہ نئے کارخانہ داروں کو تمام ممکنہ سہولیات فراہم کی جا سکیں ۔ وزیر نے کہا کہ کھرم ، سرہامہ ، اننت ناگ اور سرینگر کے زاکورہ میں ماڈل ایپل ولیجز کو ترقی دی جا رہی ہے ۔ رُکنِ اسمبلی کے ایک سوال کے جواب میں وزیر نے کہا کہ ضلع کلگام میں 64 کنال اراضی کو 2016-17 کے دوران ہائی ڈینسٹی ایپل پلانٹ کے تحت لایا گیا جبکہ 77 کنال اراضی پر ایف اینڈ بی مارکیٹ کو ترقی دینے کے سلسلے میں 554.42 لاکھ روپے خرچ کئے جا چکے ہیں ۔ وزیر نے کہا کہ نون مال کلگام میں ایپل منڈی کو ترقی دینے کیلئے 44.25 لاکھ روپے خرچ کئے جا رہے ہیں اور یہ مالی امداد مرکزی معاونت والی سکیموں کے تحت فراہم کی گئی ہے ۔ ایم آئی ڈی ایچ کے تحت پرانے اور نئے باغات کو ترقی دینے کیلئے وزیر نے کہا کہ باغ مالکان میں 6500 روپے مالیت کی کیڑے مار دوائی تقسیم کی جا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے سال 900 ہیکٹر اراضی کا نشانہ مقرر کیا گیا اور اس سال جے نشانہ ایک ہزار ہیکٹر کا مقرر کیا گیا ہے ۔ ہماچل پردیش کی طرز پر رعائتی نرخوں پر معیاری دوائیاں فراہم کرنے کے سلسلے میں ایک پالیسی فیصلہ لیا جا رہا ہے ۔ رُکنِ اسمبلی علی محمد ساگر ، خلیل بند ، ایم وائی تاریگامی اور محمد اکبر لون نے ضمنات پوچھے ۔ ان ضمنات کے جواب میں وزیر نے کہا کہ محکمے نے کسانوں کو تمام ضروری سہولیات فراہم کی ہے تا کہ اُن کا فصل معیاری ہو اور اسے بازار میں اچھی قیمتوں پر بیچ سکیں ۔