پلوامہ میں مظاہرین اور فورسز کے درمیان جھڑپیں مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے اشک آور گیس کا استعمال

سرینگر//شوپیاں میں کمسن طالب علم کی موت واقع ہونے کی خبر پھیلتے ہی پلوامہ کے کئی علاقوں میں مظاہرین اور فورسز کے درمیان تصادم ہوا جس دوران سیکورٹی فورسز نے تشدد پر اُتر آئی بھیڑ کو منتشر کرنے کیلئے اشک آور گیس کے گولے داغے۔ پولیس ذرائع کے مطابق راجپورہ اور مرن چوک پلوامہ میں معمولی خشت باری کے واقعا ت رونما ہوئے۔ راجپورہ اور مرن چوک پلوامہ میں اُس وقت زبردست ہنگامہ ہوا جب نوجوانوں نے اسلام و آزادی کے حق میں نعرے بازی کرتے ہوئے احتجاجی جلوس نکالا ۔ نمائندے کے مطابق پہلے سے تعینات سیکورٹی فورسز نے مظاہرین کو آگے جانے کی اجازت نہیں دی جس پر نوجوان مشتعل ہوئے اور سیکورٹی فورسز پر پتھراو کیا ۔ نمائندے کے مطابق تشدد پر اُتر آئی بھیڑ کو منتشر کرنے کیلئے فورسز نے ٹیر گیس شلنگ کی جس کی وجہ سے راجپورہ اور مرن چوک پلوامہ میں افراتفری کا ماحول پھیل گیا اور لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے۔ سیکورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان کافی دیر تک تصادم آرائیوں کا سلسلہ جاری رہا جس کے نتیجے میں پلوامہ کے راجپورہ اور مرن چوک میں کاروباری ادارے ٹھپ ہو کر رہ گئے اور سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت بھی معطل رہی ۔ پولیس ذرائع کے مطابق کسی بھی ناخوشگوارواقعے کو ٹالنے کیلئے پلوامہ اور شوپیاں میں سیکورٹی کے غیر معمولی اقدامات کئے گئے ہیں۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ راجپورہ اور مرن چوک پلوامہ میں سماج دشمن عناصر نے پتھراو کیا جنہیں منتشر کیا گیا جس کے بعد حالات دوبارہ معمول پر آئے۔