پانپور اور بارہمولہ میں گرینیڈ حملے شہری اوراہلکار زخمی پلوامہ کے کئی علاقوں میں جنگجو مخالف آپریشن شروع

اُڑان نیوز
سرینگر// 26جنوری کی آمد کے پےش نظر کےے گئے سخت سےکورٹی انتظامات کے بےچ پانپورمیں ایک فوجی گاڑی کو نشانہ بناتے ہوئے مشتبہ جنگجوو¿ں نے گرینیڈ داغا جو نشانے سے چوک کر سڑک پر پھٹ گیا ۔اس دھماکے میں ایک عام شہری زخمی ہوا اور کئی پرائیویٹ گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔ادھر شام دیر گئے جنگجوو¿ں نے بارہ مولہ پولیس اسٹیشن پر گرنیڈ داغا جو زور دار دھماکہ کے ساتھ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکاررفیق احمد زخمی ہوا ہے ۔ پولیس ذرائع نے تصدیق کرتے ہوئے کہاکہ آس پاس علاقوں کو محاصرے میں لے کر جنگجوؤں کی تلاش شروع کی گئی ہے۔ گرینیڈ حملے کے بعد پولیس اسٹیشن کی حفاظت پر مامور اہلکاروں نے ہوا میں گولیوں کے چند راونڈ بھی فائر کئے جس کے نتیجے میں آزاد گنج بارہ مولہ اور اُس کے ملحقہ علاقوںمیں افرا تفری مچ گئی اور لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے۔ قبل ازیںمشتبہ جنگجوو¿ں نے پانپورمیں ایک فوجی گاڑی کو ہدف بناتے ہوئے ایک گرینیڈ پھینکا۔ گرینیڈ ہدف پر جالگنے کے بجائے سڑک پر جاگرا اور اسکے پھٹنے سے ایک راہ گیر زخمی ہوا اور آس پاس کی چند پرائیوٹ کاروں کو نقصان پہنچا۔ دھماکہ کے نتیجے میں علاقے میں اتھل پتھل مچ گئی اور لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے تاہم اس دوران گشتی پارٹی نے کسی بھی طرح کی جوابی کارروائی کرنے سے گریز کیا۔حملہ آور اتھل پتھل اور افرا تفری کے بیچ جائے واردات سے فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔ حملے کے فوراََ بعد پولیس اور فورسز کی بھاری جمعیت جائے واردات پر پہنچ گئی اور ایک وسیع علاقے کو محاصرے میں لے کر حملہ آوروں کی تلاش شروع کردی۔ پولیس اور فورسز اہلکاروں نے آس پاس کے علاقوںکی تلاشی کارروائیوں کا سلسلہ شروع کردیا تاہم کسی کی بھی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی۔ صورتحال کی وجہ سے پانپور اور اس کے مضافاتی علاقوں میں سہ پہرکے بعد کاروباری اور ٹرانسپورٹ سرگرمیاں ٹھپ ہوکر رہ گئیں۔دریں اثناءپانپور میں گرنیڈ حملے کے بعد جموں سرینگر شاہراہ پر اضافی سیکورٹی فورسز کے اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے تاکہ امکانی حملوں کو ٹالا جاسکے۔ ادھر سیکورٹی فورسز نے جنگجوؤں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد پلوامہ کے کئی گاؤں کو محاصرے میں لے کر بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا جس دوران مکینوں کے شناختی کارڈ باریک بینی سے چ یک کئے گئے ۔ دفاعی ذرائع نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ سرچ آپریشن کے دوران لوگوں سے پوچھ تاچھ کی جار ہی ہے۔سیکورٹی فورسز نے پلوامہ کے کئی علاقوں کو محاصرے میں لے کر بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا ہے ۔ پولیس وفورسز نے لاسی پورہ پلوامہ اور اُس کے ملحقہ علاقوں کو محاصرے میں لے کر فرار ہونے کے راستوں پر پہرے بٹھا دئے جبکہ لوگوں کو گھروں سے باہر نہ آنے کی تلقین کی گئی ۔ ذرائع نے بتایا کہ کھریو پانپور میں گرنیڈ حملے کے بعد جموں سرینگر شاہراہ پر سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ اس دوران قاضی گنڈ سے لے کر پانپور تک شاہراہ کے چاروں طرف سیکورٹی کو تعینات کیا گیا ہے تاکہ امکانی حملوں کو رونما ہونے سے پہلے ہی ٹالا جاسکے۔ ذرائع نے بتایا کہ قاضی گنڈ ، بجبہاڑہ ، پانپور کے قریب جگہ جگہ موبائیل بینکر تعمیر کئے گئے ہیں جہاں پر ہر آنے جانے والے کی باریک بینی سے تلاشی لی جار ہی ہے۔