سال 2019ء تک سب کو چوبیسووں گھنٹے بجلی فراہم کرنے کے نشانے کو حاصل کرنے کیلئے فلیگ شپ سکیمیں شروع

اڑان نیوز
جموں//نائب وزیر اعلیٰ ڈاکٹرنرمل سنگھ نے کہا کہ حکومت پاور پروجیکٹوں کو ٹرانسفر کرانے کے معاملے کی سنجیدگی کے ساتھ وکالت کر رہی ہے کیونکہ یہ موجودہ مخلوط سرکاری کے ترقیاتی ایجنڈ ے کا ایک اہم حصہ ہے ۔ایوان میں ایم وائی تاریگامی ، وقار رسول اور کرشن لال کے سوالات کا تحریری طور جوابات دیتے ہوئے نائب وزیر اعلیٰ نے کہا کہ وزیر خزانہ ڈاکٹر حسیب اے درابو نے 2015-16 کے بجلی بجٹ میں واضح طور کہا تھا کہ حکومت این ایچ پی سی سے پن بجلی پروجیکٹوں کی واپسی کے معاملے کی پُر زور وکالت کرے گی اور اس سال کے بجٹ میں اس طرح کے پروجیکٹوں کے کام کاج اور رکھ رکھائو کے لئے رقومات بھی فراہم کی گئیں۔انہوں نے کہاکہ انہوں نے وزیر خزانہ کے سمیت بجلی کے مرکزی وزیر کے ساتھ مارچ 2016ء میں ملاقات کی اور مرکزی سرکار پر زور دیا کہ وہ این ایچ پی سی سے ڈول ہستی اور اوڑی کے بجلی پروجیکٹ واپس ریاست کو سونپ دیں۔ انہوں نے کہاکہ اس موقعہ پر بجلی سیکٹر سے جڑے کئی دیگر معاملات کو بھی اُجاگر کیا۔ نائب وزیر اعلیٰ نے کہاکہ انہوں نے بجلی وزراء کی مختلف کانفرنسوں کے دوران بھی اس معاملے کو اُجاگر کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت ریاستی حکومت کے پاس کوئی بھی ایسا مفاہمت نامہ یا معاہدہ موجود نہیں ہے جس سے یہ ظاہر ہو کہ این ایچ پی سی کی طرف سے کن شرائط اور قوانین کے تحت ڈول ہستہ پاور پروجیکٹ عملایا گیا۔ نائب وزیر اعلیٰ نے ان محرکات کا تفصیل سے ذکر کیا جن کی بدولت موسم سرما اور گرما کے دوران کشمیر اور جموں صوبوں میں بجلی کٹوتی کرنا پڑتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ مختلف سطحوں پر مشکلات حل کرنے کے لئے کئی فلیگ شِپ پروگرام شروع کئے گئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ریاست میں ترسیلی اور تقسیمی کاری کے نظام میں بہتر ی لانے کے لئے ڈی ڈی یو جی جے وائی اور آر جی جی وائی سکیمیں عملائی جارہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ مرکز نے بھی ریاست کے 86قصبوں میں تقسیم کاری اور ترسیل کے نظام کو مستحکم کرنے کے لئے 404.50کروڑ روپے کی ایک مربوط پاور ڈیولپمنٹ سکیم شروع کی ہے ۔نائب وزیر اعلیٰ نے کہا کہ محدود وسائل کے بدولت بھی جموں وکشمیر پاور ڈیولپمنٹ محکمہ ترسیل اور تقسیم کاری کے دوران بجلی کے نقصانات میں کمی لانے میں کامیاب ہوئی ہے ۔ انہوںنے اس موقعہ پر ریاست کے مختلف علاقوں میں بجلی شعبے کو تقویت بخشنے اور مختلف علاقوں میں ہاتھ میں لئے گئے نئے پروجیکٹوں کا تفصیلی خاکہ پیش کیا۔ اس موقعہ پر راجا منظور ، شیخ عبدالجبار ،محمد الطاف کلو، عبدالرحیم راتھرنے ضمنی سوال پوچھ کر اپنے اپنے حلقوں میں بجلی ڈھانچے کو بڑھاوا دینے کا مطالبہ کیا۔ ارکان نے بجلی کٹوتی کے شیڈ ول کی طرف بھی نائب وزیرا علیٰ کی توجہ مبذول کرائی۔