ضرورت پڑی تو دشمن کو گھر میں گھس کر ماریں گے: راجناتھ سنگھ

یو این آئی
لکھنو// مرکزی وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ نے پاکستان کو اپنی حرکتوں سے باز آنے کی نصیحت کی ہے۔ سنگھ یہاں انڈین ریلوے کے گودام مزدوروں کی تنظیم کے اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔مرکزی وزیر داخلہ نے کہا کہ ہندستان پاکستان کے ساتھ بہتر رشتے چاہتاہے لیکن پاکستان اپنی حرکتوں سے باز نہیں آرہا ہے۔انھوں کہا کہ ملک کے عوام کو وہ یقین دلانا چاہتے ہیں کہ دنیا میں ہندستان کا سرجھکے گا نہیں۔انھوں نے کہا کہ ہندستان کی شبیہ ایک مضبوط ملک کی بن چکی ہے۔ہندستان نے پوری دنیا کو پیغام دیدیا ہے کہ وہ سرحد کے اس پار ہی نہیں بلکہ ضرورت پڑنے پر اس پار بھی گھس کر دشمن کو جواب دے سکتاہے۔سنگھ نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی پڑوسیوں کے ساتھ بہترتعلقات قائم کرنے کے حق میں ہیں لیکن پاکستان سدھرنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ ہمارے بہادر جوانوں نے سرحد پار جاکر انتقام لیا۔آگے بھی ضرورت پڑی تو ایسا ہی کیا جائے گا۔انھوں نے کہا کہ ہندستان اب دنیا میں طاقت ور ملک کے طورپر جانا جاتاہے۔داخلہ راجناتھ سنگھ کا کہنا تھا کہ لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر پیش آنے والے واقعات سے صورتحال کشیدہ ہوجاتی ہے اور پاکستانی فوج کی بلا جواز فائرنگ سے سیز فائر کی مسلسل خلاف ورزی کی جارہی ہے جس کے نتیجے میں صورتحال بدستور خراب ہوتی جارہی ہے۔وزیر داخلہ نے واضح کردیا کہ پاکستانی فوج نے ہندوستانی چوکیوں کو نشانہ بنا کر نقصان پہنچانے کی کوشش کی اور بیشتر گولیاں بستی کی طرف جس سے وہاں رہنے والے لوگ بھی بار بار اس سے متاثر ہوتے ہیں مگر اب پاکستان ہمارے صبر کا امتحان نہ لے ،تمام چلینجوں کا منہ توڑ جواب دینے کیلئے بھارتی فوج تیار ہیں اور فوج کو یہ اختیارات دئے گئے کہ وہ مناسب طریقے پر پاکستانی جارحیت کا دندان شکن جواب دے۔انہوں نے کہا کہ بھارت اپنے تمام ہمسیایہ ملکوں بشمول پاکستان سے بہتر تعلقات کا خواہاں ہے تاہم ملک کی سالمیت پر کوئی انچ آنے نہیں دیگے اور ملکی سلامتی پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا ہے۔مرکزی وزیرداخلہ نے کہاکہ’’ پسینہ بہانے والوں میں ایشور نواس کرتاہے۔‘‘انھوں نے کہا کہ ملک کی تقدیر لکھنے والے مزدورہیں۔ریلوے کی آمدنی میں مزدوروں کا بہت بڑا تعاون ہے۔انھوں نے کہاکہ ہندستان کی معیشت تیزی سے ترقی کررہی ہے۔اور یہ پسینہ بہانے والوں کی وجہ سے ہے۔انھوں نے کہا کہ ریلوے میں پانچ ہزار سے زیادہ مال بردار ڈبے جوڑے جائیں گے۔انھوں امید ظاہر کی کہ ریلوے میں پانچ لاکھ کروڑ کی سرمایہ کاری ہوگی۔وہ ریل مزدورں کی وکالت کریں گے تاکہ انکی حصہ داری بڑھے۔اس موقع پر ریاست کے وزیر قانون برجیش پاٹھک ،میڈیکل ایجوکیشن کے وزیر آسوتوش ٹنڈن ،ٹرانسپورٹ کے وزیر مملکت (آزادانہ چارج )سوتنتردیو سنگھ ،دیہی انجینئرنگ سروس محکمہ کے وزیر موتی سنگھ اور رکن پارلیمان جگدمبیکا پال بھی موجود تھے۔