پونچھ کنٹرول لائن پر شدید گولہ باری 4 پاکستانی فوجی اہلکار ہلاک دونوں فوجوں کے ہلاکتوں سے متعلق متضاد دعوے

Army soldiers take position behind a tree near the site of a gunfight after militants stormed the District Police Lines (DPL) in Pulwama. Express Photo By Shuaib Masoodi 26-08-2017

یو این آئی +پرتپال سنگھ
راولپنڈی +پونچھ // پاکستان کا کہنا ہے کہ اس کے زیر قبضہ کشمیر میں کنٹرول لائن کے جنڈروٹ اور کوٹلی سیکٹرز میں پیر کے روز بھارتی فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں 4 پاکستانی فوجی اہلکار جاں بحق ہوگئے ہیں۔ انگریزی روزنامہ ڈان نے پاکستان فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ایک بیان کے حوالہ سے کہا ہے ’بھارت کی جانب سے اس وقت ایک بڑا مارٹر گولہ داغا گیا جب فوجی اہلکار ترسیلی لائن کی بحالی کے کام میں مصروف تھے‘۔ آئی ایس پی آر کے مطابق اس مارٹر گولے سے پاکستانی فوج کے 4 اہلکار جاں بحق ہوگئے ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے ’بھارت کی جانب سے مارٹر حملے کے بعد طرفین کے مابین گولہ باری کا تبادلہ شروع ہوا جس میں تین بھارتی فوجیوں کو ہلاک جبکہ متعدد دیگر کو زخمی کیا گیا‘۔ ایکسپریس ٹریبون کے مطابق وزیر اعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے بھارتی فوج کی گولہ باری کی مذمت کی ہے۔ انہوں نے مہلوک فوجیوں کو خراج عقیدت پیش کیا ہے۔ تاہم بھارت کا کہنا ہے کہ گولہ باری کا آغاز پاکستانی فوجیوں کی طرف سے کیا گیا۔ فوجی ذرائع نے بتایا کہ پاکستان کی جانب سے پیر کی صبح دیگوار، مالٹی علاقہ میں بھارتی فوجی چوکیوں اور دیہی علاقوں پر چھوٹے اور خود کار اسلحہ سے فائرنگ کرنے کے علاوہ مارٹر گولے داغنے شروع کر دئے ۔ ذرائع نے بتایا کہ بھارتی فوج نے بھی اس کا جواب دیا جس کے دوران ایک آفیسر سمیت کم از کم 5پاکستانی فوجی ہلاک جبکہ 4زخمی ہو گئے ۔ ذرائع نے ان پاکستانی دعوئوں کو مسترد کر دیا کہ 3بھارتی فوجی ہلاک ہو ئے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ آخری اطلاعات ملنے تک اس طرف کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ گولہ باری کا تبادلہ وقفے وقفے سے جاری ہے ۔