بی اے ڈی پی کے فنڈز کے ناجائز استعمال کا الزام

طارق خان
مینڈھر//پی ڈی پی یوتھ لیڈر ایڈوکیٹ ندیم خان نے یہاں ایک کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ضلع انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ڈی سی آ فس پونچھ کے ملازمین آنکھیں بند کرکے پلان بناتے ہیں اور بی اے ڈی پی کے پیسے کا ناجائز استعمال کرتے ہیں ۔انھوں نے کہا کہ مینڈھر کے ساتھ ترقیاتی کاموں میں اپنی آنکھوں کو بند رکھ کر اپنی مرضی اور قانون کی خلاف ورزی کرکے کام کئے جا رہے ہیں۔ جس میں چیف ایجوکیشن آفیسر پونچھ نے کچھ کام اپنی من مانی سے کئے ہیں۔جو کہ انکے خاص الخاص افراد ہیں انہیں ہی مبینہ طور کام دئے گئے ہیں ۔انہوں نے چار دیواری کی تعمیرگورنمنٹ مڈل سکول پھامڑہ ناڑ گورسائی،گورنمنٹGMSسلواہ اور ایم ایل اے کا ہوم گارڈن کالابن،GMSکالابن کا سکول بھی شامل ہے۔ جس کی رقومBADPسے الاٹ کی گئی ہے جبکہ یہ سکول کنٹرول لائن سے کوسوں دور ہیں۔ جب کہ ان کاBADPفنڈز استعمال کرنے کا کوئی حق نہ ہے۔ ندیم رفیق حسین خان نے کہا کہ ایسالگتا ہے کہ ضلع انتظامیہ پونچھ نے بارڈر لائن کو کھینچ کر کالابن اور گورسائی تک لے گئے ہیں۔ اور بڑے افسوس کی بات ہے کہ ڈی سی پونچھ نے اپنی آنکھیں بند رکھی ہوئی ہیں۔ اور ضلع کے اندر جو کام ہو رہے ہیں۔ اور خاص کر تحصیل مینڈھر کے اندر صرف نیشنل کانفرنس کے کارکنان کونوٹس کیا جا رہا ہے اور ایم ایل اے کے کہنے پر سیاہ وسفید سب جائز ہے۔حالانکہ یہ پیشہ صرف ان ہی پنچائتوں میں رہنا چاہیے جن پنچائتوں کا حق ہےBADPمیں پنچائت دھڑاٹی،بھروتی،بالاکوٹ و دھارگلون لوہر ۔دھارگلون مڈل،دھارگکون اپر،گلوہتہ،دہری ڈبسی، گوہلد،دبڑاج ،ساگرہ،بلنوئی وغیرہ وغیرہ شامل ہیں۔ندیم رفیق حسین خان نے وزیر اعلی محبوبہ مفتی اور چیف سکریٹری آف جموں و کشمیر سے اپیل کی ہے کہ جو فنڈز ان کو الٹ کرنے کی اتھارٹی رکھتے ہیں انکے خلاف سخت سے سخت کاتھائیں بنائے جائیں تاکہ ان فنڈز کاغلط استعمال نہ ہو سکے۔ اور جو فنڈز غلط جگہ پر الاٹ ہوئے ہیںBADPکے انکو واپس کیا جائے اور اصل جگہ پر لگایا جائے۔پریس کانفرنس میں شامل حضرات آفتاب احمد خان سابقہ سرپنچ ساگرہ، یونس ڈاربلاک صدر منکوٹ،محمد خالق منکوٹ، گلسید خان دھراٹی،رشید سید دھارگلون،ماجد خان ہرنی،کفیل خان یوتھ صدر مینڈھر،لیاقت حسین خان سابقہ پنچ،محمدفاروق جٹ،مستور چوہدری کالابن،رزاق خان،نواز خان،محمد رشید خان،ایاض احمد خان وغیرہ ہیں۔