موسم کی خوش گوار کروٹ

12SRNP7:-SRINAGAR DECEMBER 12 (UNI) Women holding umbrellas to cover themselves aimed seasons first snowfall walking down the Safakadal road in Srinagar experienced much to the delight of people on Tuesday.

وادی کا زمینی رابطہ باہری دنیا سے منقطع
آئندہ 2روز میں صورتحال میں تبدیلی کا امکان
سری نگر//برف باری اور بارش کے باعث وادی کا بیرون دنیا سے زمینی رابطہ منگل کو مسلسل دوسرے دن بھی منقطع رہا۔ تین سو کلو میٹر طویل سری نگر جموں شاہراہ اور 86 کلو میٹر طویل مغل روڑ پر گاڑیوں کی آمدورفت دوسرے دن بھی معطل رہی۔ دوسری جانب شمالی کشمیر کے درجنوں دوردراز علاقے بدستور اپنے ضلعی اور تحصیل ہیڈکوارٹروں سے کٹے ہوئے ہیں۔ خطہ لداخ کو سری نگر سے جوڑنے والی شاہراہ 10 دسمبر کو موسم سرما کے مہینوں کے لئے گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند کی گئی۔ ایک ٹریفک پولیس عہدیدار نے بتایا ’سری نگر جموں قومی شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت بدستور معطل ہے‘۔ انہوںنے بتایا کہ شاہراہ کے مختلف مقامات بشمول جواہر ٹنل، قاضی گنڈ اور شیطان نالہ کے نزدیک قریب ڈیڑھ فٹ برف جمع ہوگئی ہے۔ مذکورہ عہدیدار نے بتایا کہ شاہراہ کی دیکھ ریکھ کے لئے ذمہ دار بارڈر روڑس آرگنائزیشن (بی آر او) نے اسے آمدورفت کے قابل بنانے کے لئے اپنی مشینری اور افرادی قوت کو کام پر لگادیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شاہراہ کے مختلف مقامات پر تعینات ٹریفک پولیس اہلکاروں کی جانب سے گرین سگنل ملنے کے بعد اس پر گاڑیوں کی آمدورفت بحال کردی جائے گی۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق شاہراہ کے دونوں اطراف سینکڑوں کی تعداد میں گاڑیاں درماندہ ہوکر رہ گئی ہیں جن میں زیادہ تعداد ٹرکوں کی ہے۔ جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان کو جموں خطہ کے راجوری اور پونچھ اضلاع سے جوڑنے والے تاریخی مغل کو بھی مسلسل دوسرے دن بھی گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند رکھا گیا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ’مغل روڑ منگل کو مسلسل دوسرے دن بھی گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند رکھا گیا۔ پیر کی گلی اور دوسرے مقامات پر درمیانہ سے بھاری درجے کی برف باری کے بعد اس روڑ کو پیر کے روز گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند کیا گیا تھا‘۔ شدید برف باری کے باعث شمالی کشمیر کے بیشتر بالائی علاقوں کا اپنے ضلعی اور تحصیل ہیدکوارٹروں سے رابطہ منقطع ہوکر رہ گیا ہے۔ سوموارکودن بھر اوردوران شب متواتربارشیں ہوجانے کے باعث شہرسری نگرسمیت وادی کے تمام قصبہ جات کے بازاروں ،چوراہوں ،بس اڈوں اورمسافراسٹاپوں کے زیرآب آجانے کے باعث لوگوں کومنگل کی صبح آواجاوی میں مشکلات کاسامناکرناپڑا۔اس دوران منگل کی صبح برف باری ،گہری دھنداورکم روشنی کے باعث سری نگرائرپورٹ سے پروازوں کی آواجاوی کئی گھنٹوں بندرہی تاہم موسمی صورتحال میں بہتری آنے کے بعدنئی دہلی سے آنے والے ایک مسافرجہازکوسرینگرہوائی اڈے پراُترنے کی اجازت دی گئی ۔ادھرسری نگرمیں قائم محکمہ موسمیات میں تعینات ماہرین نے اس پیشگوئی کااعادہ کیاکہ 15دسمبرتک کشمیروادی ،خطہ چناب اورخطہ پیرپنچال کے تحت آنے والے علاقوں میں بارشوں اوربرف باری کاسلسلہ جاری رہے گا۔ منگل کی صبح جب شہرسرینگرمیں لوگ نیندسے جاگے توانہوں نے اپنے گردونواح کے مکانات ،دکانات اوردیگرعمارات کی چھتوں پرسفیدچادرپائی جبکہ زمین کی تہہ بھی کسی حدتک برف کی چادرسے لپٹ چکی تھی ۔لگ بھگ 10بجے صبح تک کبھی ہلکی اورکبھی تیزبرف باری نے شہری آبادی میں خوشی کی لہردوڑادی ۔تاہم ساڑھے دس بجے سے موسم نے اچانک نئی کروٹ لی ،اوربارشوں وبرف باری کاسلسلہ تھم گیا،اوراسی بیچ سورج کی کرنیں جلوہ افروزہوئیں ۔بعدازاں سری نگرشہرمیں منگل کے روزسہ پہرموسمی صورتحال خوشگواررہی اوردرجہ حرارت بھی ٹھیک رہا۔سرینگرمیں قائم محکمہ موسمیات کے ترجمان نے بتایاکہ منگل کی صبح سری نگرشہراوراسکے نواحی علاقوں میں 2انچ برف ریکارڈکی گئی۔اُدھرشمالی ،جنوبی اوروسطی کشمیرکے باقی 9اضلاع بشمول بارہمولہ ،کپوارہ ،بانڈی پورہ ،بڈگام ،گاندربل ،پلوامہ ،شوپیان ،کولگام اوراسلام آبادکے بیشترمیدانی علاقوں میں بھی کم وبیش شہرسرینگرجیسی موسمی صورتحال رہی ۔ان سبھی علاقوں میں بھی سومواراورمنگل وارکی درمیانی رات کبھی متواتربارشیں توکبھی ہلکی برف باری ہوتی رہی ۔منگل کی صبح شمال وجنوب بیشترمیدانی علاقوں میں صحنوں ،کھیتوں وکھلیانوں کی تہہ اورمختلف عمارات کے چھت سفیدچادرمیں لپٹے تھے ۔بیشترمیدانی علاقوں میں بھی منگل کی صبح دوسے تین انچ تک برف ریکارڈکی گئی ۔تاہم یہ سفیدچادرکچھ وقت کی مہمان ہی ثابت ہوئی کیونکہ آفتاب کی کرنیں جلوہ افروزہوتے ہی برف کی یہ ہلکی تہہ پانی پانی ہوگئی ۔ شمالی ،جنوبی اوروسطی کشمیرکے بیشترعلاقوں میں بھی منگل کوصبح گیارہ بجے سے سہہ پہرتک موسمی صورتحال خوشگواررہی کیونکہ سورج کی کرنیں نمودارہونے کے بعددرجہ حرارت میں بہتری آگئی ۔تاہم نمائندوں کے مطابق سوموارکوپورے دن اوردوران شب متواتربارشیں ہوجانے کے باعث شہرسری نگرسمیت وادی کے تمام قصبہ جات کے بازاروں ،چوراہوں ،بس اڈوں اورمسافراسٹاپوں کے زیرآب آجانے کے باعث لوگوں کومنگل کی صبح آواجاوی میں مشکلات کاسامناکرناپڑا۔شہرسری نگرمیں سیول لائنزاورشہرخاص کے تحت آنے والے کئی بازاروں ،سڑکوں وگلی کوچوں میں بارشوں کاپانی جمع ہونے کے باعث پیدل چلنے والے لوگو ں کوعبورومرورمیں مشکلات ہوئیں ۔تاہم سری نگرمیونسپل کارپوریشن کی جانب سے جمع پانی کی نکاسی کیلئے فوری اقدامات اُٹھائے جانے کے بعدصورتحال میں کافی بہتری ہوئی ۔ادھرسومواراورمنگل وارکی درمیانی شب سرینگرسمیت وادی بھرکے میدانی علاقوںمیں متواتربارشوں کے ساتھ ہلکی برفباری اوربالائی علاقوں میں مسلسل برف باری کے نتیجے میں کشمیروادی کوباقی دنیاسے جوڑنے والاواحدزمینی رابط یعنی سرینگرجموں شاہراہ کوٹریفک کیلئے مکمل طورپربندرکھاگیاجبکہ مغل روڑ،گریزبانڈی پورہ روڑاورکپوارہ ٹنگدارروڑبھی گاڑیوں کی آواجاہی کیلئے بندرہے۔خیال رہے سری نگرجموں شاہراہ کوسوموارکی شام مسلسل بارشیں ہونے کے بعدآمدورفت کیلئے بندکردیاگیاتھاجبکہ مغل روڑ،گریزبانڈی پورہ شاہراہ اورکپوارہ ،کرناہ روڑکوپیرکی گلی ،رازدان ٹاپ اورسادھناٹاپ سمیت کئی اوپری علاقوں میں بھاری برف باری ہونے کے بعدگاڑیوں کی آمدورفت کیلئے سوموارکی صبح ہی بندکردیاگیاتھا۔اس دوران منگل کی صبح برف باری ،گہری دھنداورکم روشنی کے باعث سری نگرائرپورٹ سے پروازوں کی آواجاہی کئی گھنٹوں بندرہی تاہم موسمی صورتحال میں بہتری آنے کے بعدنئی دہلی سے آنے والے ایک مسافرجہازکوسرینگرہوائی اڈے پراُترنے کی اجازت دی گئی ۔سرینگرائرپورٹ کے حکام نے بتایاکہ منگل کی صبح بارشوں اورہلکی برف باری کے بیچ گہری دھنداورکم روشنی ہونے کے باعث کسی بھی مسافرجہازکویہاں اُترنے کی اجازت نہیں دی گئی اورنہ کوئی جہازمسافروں کولیکریہاں سے اُڑان بھرسکا۔انہوں نے کہاکہ موسمی صورتحال خراب رہنے تک کسی بھی جہازکویہاں اُترنے یااُڑان بھرنے کی اجازت نہیں دی گئی۔ائرپورٹ کے حکام نے بتایاکہ موسمی صورتحال بہترہوجانے کے بعدنئی دہلی سے آنے والی ایک پروازکویہاں اُترنے کی اجازت دی گئی جبکہ اسکے بعدمزیددومسافرجہازسرینگرہوائی اڈے پراُترگئے ۔دریں اثناء سری نگرمیں قائم محکمہ موسمیات میں تعینات ماہرین نے اس پیشگوئی کااعادہ کیاکہ 15دسمبرتک کشمیروادی ،خطہ چناب اورخطہ پیرپنچال کے تحت آنے والے علاقوں میں بارشوں اوربرف باری کاسلسلہ جاری رہے گا