این ای ای ٹی(NEET) (PG) امتحان2018 وزیر اعلیٰ کی مداخلت کے بعد مرکز نے وادی کے اُمیدواروں کےلئے دو مراکز قائم کئے

جموں // وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی درخواست کے تناظر میں مرکزی حکومت نے آنے والے این ای ای ٹی( پی جی) امتحان2018 میں شامل ہونے والے وادی کے اُمیدواروں کے لئے دو امتحانی مراکز قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ایک مراسلے میں مرکزی وزارت صحت نے بورڈ آف پروفیشنل امتحانات حکام کو ہدایت دی ہے کہ وہ وادی کشمیر سے تعلق رکھنے والے 5300 اُمیدواروں کے لئے سرینگر اور بارہ مولہ میں امتحانی مراکز قائم کریں۔ یہ فیصلہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی طرف سے 10 نومبر کو مرکزی وزیر برائے صحت و خاندانی بہبود جے پی نڈا کے نام بھیجے گئے مکتوب کے بعد لیا گیا ہے جس میں وزیر اعلیٰ نے نیشنل بورڈ برائے امتحانات کی طرف سے7 جنوری2018 کو لئے جانے والے امتحان میں وادی کے طُلباءکے لئے امتحانی مرکز کی عدم دستیابی کا معاملہ اُن کی نوٹس میں لایا تھا۔ وزیر اعلیٰ نے اس مراسلے میں کہا تھاکہ وادی کے میڈیکل اُمیدواروں کو امتحانی مراکز وادی میں نہ ہونے سے کافی مشکلات کاسامنا کرنا پڑے گا۔اس حوالے سے طلبا کے کئی گرو¿پوں نے( این ای ای ٹی) ( پی جی)2018 امتحان کا مرکز سرینگر میں بھی قائم کرنے کا معاملہ وزیر اعلیٰ کی نوٹس میں لایا تھا اور کہا گیا تھا کہ وادی سے تعلق رکھنے والے کافی تعداد میں میڈیکل گریجویٹ اُمیدوار اس امتحان میں شامل ہونے جارہے ہیں۔