محبوبہ مفتی نے جسٹس آنند کی وفات پر رنج و غم کا اظہار کیا آنجہانی کو ایک معروف جورسٹ قرار دیا جن کی خدمات کو لمبے عرصے تک یاد کیا جائے گا

جموں //وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے ملک کے سابق چیف جسٹس ڈاکٹر جسٹس آدرش سین آنند کے انتقال پر گہرے دُکھ اور صدمے کا اظہار کیا ہے ۔ آنجہانی آج صبح سورگ باش ہو گئے ۔ اپنے تعزیتی پیغام میں وزیر اعلیٰ نے جسٹس آنند کو ملک کا ایک معروف جورسٹ قرار دیا ۔ جنہوں نے انصاف کو ایک آئینی سمت دی اور عوام کو موثر ڈھنگ سے انصاف فراہم کرنے کیلئے اُن کی خدمات کو ایک لمبے عرصے تک یاد رکھا جائے گا ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ عوامی نوعیت کے معاملات میں آنجہانی کے حکمنامے قانونی برادری کی متواتر رہنمائی کرتے رہیں گے تا کہ وہ مجموعی طور پر سماج کی بہبودی کیلئے کام کر سکیں ۔ محبوبہ مفتی نے بحثیت چئیر مین نیشنل لیگل سروسز اتھارٹی کے طور پر لوک عدالتوں کا تصور متعارف کرانے کیلئے جسٹس آندد کے رول کو بھی یاد کیا ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ نیشنل ہیومن رائیٹس کمیشن آف انڈیا کے چئیر مین کی حثیت سے بھی آنجہانی نے ایک بے مثال کام انجام دیا ۔ وزیر اعلیٰ نے آنجہانی کی آتما کی شانتی کیلئے دعا کرتے ہوئے سوگوار کنبے بالخصوص اُن کی بیٹی ایڈووکیٹ منیشا گاندھی کے ساتھ ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کیا ۔