دراندازی کی کوشش ناکام ،2عدم شناخت جنگجو جاں بحق اوڑی سیکٹر تصادم وسیع علاقے میں تلاشی آپریشن پیما نے پر جاری/ فوج کا دعویٰ

سید فیاض
بارہمولہ //سرحدی قصبہ اوڑی کے کمل کوٹ سیکٹر میں اتوار کی صبح کو فوج نے دراندازی کی کوشش کو ناکام بنانے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہاکہ ایک خونین تصادم آرائی کے دوران دوعدم شناخت جنگجو جاں بحق ہوئے ہیں ۔جبکہ تلاشی آپریشن بڑے پیمانے پر جاری ہے۔ دفاعی ذرائع نے مزید بتایا کہ پاکستانی رینجرس کی گولہ باری کا سختی کے ساتھ جواب دیا گیا ، برفباری سے قبل بڑی تعداد میں جنگجو اس طرف آنے کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق دفاعی ترجمان نے دعویٰ کیا ہے کہ کمل کوٹ اوڑی سیکٹر میں دراندازی کی کوشش کے دوران دو جنگجو جاں بحق ہوئے ہیں۔ دفاعی ترجمان راجیش کالیہ کے مطابق جدید اسلحہ سے لیس جنگجوئوںکے ایک گروپ نے اس طرف آنے کی کوشش کی تاہم متحرک اہلکاروں اور جنگجوئوں کے درمیان کئی منٹوں کا گولیوں کا تبادلہ ہوا جس دوران2 ملی ٹنٹوں جن کی فوری طورپر شناخت نہیں ہو سکی کو مارا گرایا گیا ہے۔ دفاعی ترجمان نے مزید بتایا کہ برف باری سے قبل بڑی تعداد میں ملی ٹینٹ اس طرف آنے کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں تاہم حد متارکہ پر فوج کو چوکس کر دیا گیا ہے۔ انہوںنے کہاکہ کسی کو بھی اس طرف آنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔ ادھر گھنے جنگلات میں ممکنہ طورموجود مزیدجنگجوؤں کو ڈھونڈ نکالنے کے لئے تلاشی کارروائی وسیع پیمانے پر جاری ہے۔ سرینگر میں مقیم فوج کے دفاعی ترجمان نے جھڑپ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ سرحد کی حفاظت پر مامور فوجی اہلکاروں نے اوڑی سیکٹر میں جنگجوؤں کے ایک گروپ کو سرحد کے اسپار دراندازی کی کوشش کرتے ہوئے دیکھا۔ تاہم جب فوجیوں نے جنگجوؤں کو للکارا اور انہیں خودسپردگی اختیار کرنے کے لئے کہا تو انہوں نے ایسا کرنے کے بجائے خودکار ہتھیاروں سے فائرنگ کی۔ انہوں نے بتایا کہ فوجیوں نے جوابی کارروائی کی جس کے بعد طرفین کے مابین باضابطہ طور پر جھڑپ کا آغاز ہوا۔ انہوں نے بتایا کہ گولیوں کے تبادلے میں دو جنگجوئوںہلاک ہو گئے۔ ذرائع نے بتایا کہ اتوار کی صبح کنٹرول لائن کی نگرانی پر مامورفوجی اہلکاروں نے گشت کے دوران جنگجوؤں کے ایک گروپ کی نقل و حرکت دیکھی۔ذرائع کے مطابق جب فوج نے آس پاس کے علاقہ کو گھیرے میں لے کرجنگجوؤں کو سرنڈر کرنے کی پیشکش کی تو جواب میں انہوں نے فوج پر اندھادھند گولیاں چلائیں جس پر فوجی اہلکاروں نے فوری طور مورچہ سنبھالتے ہوئے جوابی کارروائی شروع کی۔اس طرح طرفین میں باضابطہ جھڑپ کا آغاز ہوا اوران کے درمیان شدید گولی باری کاسلسلہ کئی گھنٹوں تک جاری رہا۔فوج کا کہنا ہے کہ اس جھڑپ میں دوجنگجو جاں بحق ہوئے ۔اسی دوران فورسز کی اضافی کمک طلب کرکے مزید علاقوں کو گھیرے میں لیکر تلاشی کارروائی جاری رکھی گئی۔ دفاعی ذرائع کے مطابق علاقہ میں اگر چہ گولیوں کا تبادلہ رْک گیا ہے لیکن فوج کو خدشہ ہے کہ مارے گئے جنگجو کے دیگر ساتھیوں نے لائن آف کنٹرول کے متصل گھنے جنگلات میں پناہ لے رکھی ہے۔انہیں تلاش کرنے کیلئے فوج کی مزید کمک کی مدد سے وسیع جنگلات کو گھیرے میں رکھا گیا ہے اور آخری اطلاع ملنے تک تلاشی کارروائی جاری تھی۔