سوپور میں خاتون کی چوٹی کٹنے کے بعد جھڑپیں فورسز نے مشتعل لوگوں کو منتشر کر نے کے لئے آنسو گیس کے گولے داغے

اڑان نیوز
سرینگر//وادی کے شمالی قصبہ سوپورمیں اتوارکے روزا س وقت مشتعل لوگوں اورپولیس وفورسزکے درمیان جھڑپیں ہوئیں اورمظاہرین کومنتشرکرنے کیلئے آنسوگیس کے کچھ گولے داغے گئے جب قصبہ میں یہ خبرپھیلی کہ خوشحال متوعلاقہ میں نامعلوم افرادنے ایک اور25سالہ خاتون کی چوٹی گھرمیں داخل ہوکرکاٹ ڈالی ہے ۔مقامی لوگوں کے مطابق متاثرہ خاتون جسکی یہاں صرف دوسال قبل شادی ہوئی ہے ،اپنے گھرمیں موجودتھی کہ نامعلوم افرادنے گھرمیں داخل ہوکراُسکی چوٹی کاٹ ڈالی ۔متاثرہ خاتون کوفوری طورپرسب ڈسٹرکٹ اسپتال سوپورطبی معائنے اورعلاج ومعالجہ کیلئے منتقل کیاگیا۔خیال رہے کچھ روزقبل بھی اسی علاقہ میں ایک خاتون کی چوٹی کاٹنے کاپُراسرارواقعہ رونماہواتھا۔تازہ واقعے کی خبرپھیلتے ہی مردوزن گھروں سے باہرآئے اورانہوں نے شدیدمظاہرے شروع کئے۔مظاہرین کومنتشرکرنے کیلئے پولیس وفورسزکوکارروائی کرناپڑی ۔اس دوران شہرسرینگرکے ایک مضافاتی علاقہ لالبازارکی بوٹہ شاہ محلہ بستی میں بھی اتوارکے روزایک خاتون کی چوٹی کاٹنے کاواقعہ پیش آیا۔مقامی لوگوں کے مطابق نامعلوم افرادنے صبح 10بجے یہاں ایک خاتون کی چوٹی کاٹ ڈالی ،اوراُسکے سونے کے زیورات بھی اُڑالئے۔اس واقعے کیخلاف لوگوں نے پُرامن طورآوازبلندکی تاہم پولیس کی ٹیم نے بروقت وہاں پہنچ کرلوگوں کواسبات کی یقین دہانی کرائی کہ اس معاملے میں فوری کارروائی عمل میں لاکرملزم کوگرفتارکرنے کی کوشش فوری طورپرشروع کی جائیگی ۔اُدھرنزدیکی علاقہ حضرتبل میں بھی سخت کشیدگی اورتشویش پائی جاتی ہے کیونکہ یہاں مبینہ طورپرسنیچرکوشام دیرگئے نامعلوم افرادنے ایک بزرگ خاتون کی چوٹی کاٹ ڈالی۔اُدھرلالبازار،حضرتبل ،حبک ،عمرکالونی،زکورہ ،الٰہی باغ اوربژھ پورہ میں گیسوتراشی واقعات کولیکرسخت تشویش پائی جاتی ہے ،اوریہاں کے نوجوان رضاکارانہ طورپرباری باری شبانہ گشت کرنے پرمجبورہیں ۔کے این ایس کے مطابق ٹریڈرس فیڈریشن پانپورنے سوموارکیلئے قصبہ میں احتجاجی ہڑتال کال دی کیونکہ نمبلہ بل علاقہ میں سنیچرکی شام مبینہ طورپرنامعلوم افرادنے ایک جواں سال خاتون کی چوٹی کاٹ ڈالی۔اس دوران اتوارکے روزایسے واقعات کیخلاف اوڑی،لنگامہ اوربونیارمیں کاروباری سرگرمیا ں معطل رکھی گئیں۔خیال رہے بانڈی اوربونیارمیں حالیہ کچھ دنوں میں گیسوتراشی کے کچھ واقعات رونماہوچکے ہیں ،اورسنیچرکے روزبونیارقصبہ میں مشتعل نوجوانوں اورپولیس وفورسزکے درمیان پُرتشددجھڑپیں بھی ہوئیں۔